Custom Heading

نئی دہلی کے علاقے کو وزیراعلی اروند کیجریوال کا تحفہ، اب لاکھوں محروم لوگوں کو مفت اور صاف پانی ملے گا
لیوٹینز زون میں بین الاقوامی سطح کی صفائی ہوگی،کیجریوال حکومت بی کے دت کالونی کے ہر گھر کو مفت پانی
کیجریوال


لیوٹینز زون میں بین الاقوامی سطح کی صفائی ہوگی،کیجریوال حکومت بی کے دت کالونی کے ہر گھر کو مفت پانی کا کنکشن اور مفت پانی بھی ملے گا

نئی دہلی، 28 نومبر(ہ س)۔

وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج نئی دہلی خطہ کے لاکھوں لوگوں کے سالوں سے مسائل کو حل کیا۔ اب اس خطے کے لاکھوں لوگوں کو صاف اور مفت پانی ملے گا۔ دہلی حکومت نئی دہلی میونسپل کونسل علاقے میں بی کے دت کالونی کے ہر گھر کو مفت پانی کا کنکشن فراہم کرے گی۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج این ڈی ایم سی کی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے یہ ہدایات دیں۔ اس وقت کنکشن دینے کے لیے مکینوں سے 7500 روپے وصول کیے جا رہے تھے جس کی وجہ سے لوگ کنکشن نہیں لے رہے۔ اس کے ساتھ ہی NDMC علاقے کی کثیر المنزلہ سوسائٹیوں کے مکین بھی اب مفت پانی کی اسکیم کا فائدہ حاصل کر سکیں گے۔ کثیر المنزلہ سوسائٹیوں میں بیک وقت بلک کنکشن ہونے کی وجہ سے رہائشیوں کو فوائد نہیں مل رہے تھے۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ہدایت دی کہ این ڈی ایم سی کو بھی اسی بنیاد پر اسکیم کا فائدہ دیا جائے جس طرح دہلی جل بورڈ دیگر اسی طرح کی سوسائٹیوں کو اسکیم کا فائدہ دے رہا ہے۔ نیز، اسکیم کے شروع ہونے کے بعد سے، ان سوسائٹیوں کے مکینوں کو بھی فوائد دینے کے لیے ایک منصوبہ پیش کیا جانا چاہیے۔ اس کے علاوہ وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کناٹ پلیس، ہنومان مندر اور جن پتھ کے علاقے میں عالمی معیار کی صفائی کرنے کی ہدایت دیں۔نئی دہلی میونسپل کونسلنگ کی میٹنگ آج وزیر اعلی اروند کیجریوال کی صدارت میں منعقد ہوئی۔ یہ میٹنگ این ڈی ایم سی کے دفتر میں منعقد ہوئی۔ اس میٹنگ میں کونسل کے اراکین کی طرف سے کئی مسائل اٹھائے گئے اور ان پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ میٹنگ میں بحث کے بعد وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کئی مسائل کو ہری جھنڈی دے دی۔

کونسل کے اجلاس میں بی کے دت کالونی میں پانی کا کنکشن دینے کا ایجنڈا رکھا گیا۔ یہ کالونی دہلی کی بہت پرانی کالونی ہے۔ پہلے یہاں مشترکہ رابطے تھے۔ یعنی چار گھروں کا غسل خانہ تھا۔ چار گھروں کے لوگ اپنے گھروں سے نکل کر ایک ہی باتھ روم استعمال کرتے تھے۔ بعد میں مکینوں نے اپنے گھروں کے اندر باتھ روم بنالئے۔ بعض اوقات وہاں بچھائی گئی پائپ لائن میں گندگی وغیرہ کی شکایات آتی تھیں۔ گھروں کے اندر سے پائپ جانے کی وجہ سے ان کو کھود کر باہر نہیں نکالا جا سکا۔ اس مسئلہ کو حل کرنے کے لیے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے بی کے دت کالونی میں پانی کی نئی پائپ لائن بچھائی ہے۔ اس کے بعد ایم ڈی ایم سی نے تمام گھروں کو علیحدہ پانی کا کنکشن دینے کے لیے جو پائپ لائن ڈالی، اس میں ہر گھر کو کنکشن دینے کے لیے 7500 روپے مانگے گئے۔ یہ ایجنڈا پہلے بھی کونسل کے اجلاس میں آیا تھا۔ اس سلسلے میں وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ پانی کے میٹر لگانے کے لیے اتنا زیادہ چارج کرنا درست نہیں ہے۔ کونسل کے اجلاس میں وزیراعلیٰ نے آسان راستہ نکالنے کی ہدایت کی تاکہ ہر کوئی میٹر لگوا سکے۔ اس پر افسران نے 7500 روپے قسطوں میں لینے کا مشورہ دیا۔ ہر کنکشن پر 200-200 روپے عوام سے قسطوں میں بل کے ساتھ لئے جائیں۔ آج کی میٹنگ میں وزیر اعلی اروند کیجریوال نے 200-200 روپے کی قسطوں میں 7500 روپے نہ لینے کی ہدایت دیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ تمام گھروں کو مفت پانی کا کنکشن دیا جائے گا۔ تاکہ ہر گھر میں پانی کا کنکشن ہو۔ جہاں سے پانی کا اخراج ہو اسے بھی روکا جائے۔ ہر گھر کو مفت پانی کا کنکشن دیا جائے۔ اس کے ساتھ ہی پوری دہلی میں لاگو فی خاندان 20 ہزار لیٹر مفت پانی کا فائدہ بھی بی کے دت کالونی کے مکینوں کو ملنا چاہئے۔ اس کے علاوہ حلف نامہ بھی نہیں لیا جائے گا۔ کنکشن دیتے وقت صرف بجلی کا بل وصول کیا جائے گا. این ڈی ایم سی علاقہ کی کثیر المنزلہ سوسائٹیوں کے مکینوں کو مفت پانی کی اسکیم کا فائدہ ملے گا۔کونسل میٹنگ میں قدوائی نگر کی کثیر المنزلہ سوسائٹیوں میں ہر خاندان کو میٹر کنکشن دینے کا ایجنڈہ رکھا گیا۔ قدوائی نگر میں کثیر منزلہ سوسائٹیاں ہیں۔ یہاں ہر فلیٹ کے لیے علیحدہ پانی کا کنکشن نہیں ہے۔ یہاں NDMC بڑی مقدار میں پانی دیتا ہے۔ وہ پانی ٹاورز کو فراہم کیا جاتا ہے۔ اس لیے وہاں 20 ہزار لیٹر مفت پانی فراہم کرنے کی اسکیم پر عمل نہیں ہو رہا۔ کیونکہ یہاں کے ہر گھر میں میٹر نصب نہیں ہے۔ اسی طرح کا مسئلہ دہلی کے کچھ اور علاقوں میں بھی آیا تھا۔ جہاں دہلی جل بورڈ کا بلک کنکشن تھا اور لوگوں کا اپنے گھروں پر ذاتی رابطہ نہیں تھا۔ وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے این ڈی ایم سی کو ہدایت دی کہ وہ اس اسکیم کو یہاں بھی اسی بنیاد پر نافذ کرے۔ اس دوران اس بات پر بھی غور کیا گیا کہ جب سے مفت پانی کی اسکیم نافذ ہوئی ہے، ان لوگوں کو بھی اس کا فائدہ کیسے دیا جا سکتا ہے۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ اس پر لائحہ عمل تیار کرکے آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے۔ اس سے مشرقی قدوائی نگر، نیو موتی باغ اور این ڈی ایم سی کی کثیر المنزلہ سوسائٹیوں کو فائدہ پہنچے گا جن کے بلک کنکشن ہیں۔

میٹنگ میں نئی دہلی میونسپل کونسل کے کناٹ پلیس، ہنومان مندر اور جن پتھ علاقے میں صفائی کا ایجنڈا رکھا گیا۔ نئی دہلی ملک کی جان ہے اور ملک بھر سے لوگ یہاں دیکھنے آتے ہیں۔ لیکن کناٹ پلیس، جن پتھ، ہنومان مندر کے آس پاس بین الاقوامی سطح کی صفائی نہیں ہے۔ یہاں صفائی کے نظام کو ٹھیک کرنے کے لیے مکینیکل اسپیڈنگ ایک موثر آپشن ہو سکتی ہے۔ اس حوالے سے وزیر اعلیٰ کا کہنا تھا کہ یہاں جس نظام کے ذریعے صفائی کی جاتی ہے اس کی حالت ٹھیک نہیں ہے۔ وہ پورا علاقہ بہت گندا لگتا ہے۔ کناٹ پلیس، جن پتھ اور ہنومان مندر کے آس پاس کے علاقے میں عالمی معیار کی صفائی کی جانی چاہیے۔ اس کے لیے جدید ٹیکنالوجی پر بیس مشینیں استعمال کی جائیں۔ اس کے ساتھ صفائی کے لیے جو بھی بہترین پلان ہو، وہ پلان تیار کر کے آئندہ اجلاس میں رکھا جائے۔ اس کے ساتھ صفائی کا نظام اس طرح بنایا جائے کہ پوری نئی دہلی کے علاقے میں یہ عالمی معیار کا ہو۔

دہلی کی اروند کیجریوال حکومت نے اپنی پہلی مدت میں ہی دہلی کے باشندوں کو ماہانہ 20 ہزار لیٹر مفت پانی فراہم کرنے کی اسکیم شروع کی تھی۔ 2013 میں حکومت کے قیام کے بعد وزیر اعلیٰ نے اپنے انتخابی وعدے کے تحت اس اسکیم کو لاگو کیا تھا۔ تب سے یہ اسکیم پوری دہلی میں لاگو ہے۔ گرمیوں میں پانی کی زیادہ کھپت کی وجہ سے دہلی کے تقریباً 15 لاکھ خاندان اس اسکیم سے مستفید ہوتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ اگر سردیوں کے موسم میں پانی کی کھپت کم ہو جائے تو اس سے فائدہ اٹھانے والوں کی تعداد میں تقریباً 4 لاکھ کا اضافہ ہو جاتا ہے۔ یعنی سردیوں کے موسم میں دہلی کے تقریباً 19 لاکھ خاندان اس اسکیم کا فائدہ اٹھاتے ہیں۔

ہندوستھان سماچاراویس/محمد


 rajesh pande