Custom Heading

ریلائنس فاونڈیشن نے وومین کنیکٹ چیلنج انڈیا گرانٹ پانے والی تنظیموں کے ناموں کا اعلان کیا
ریلائنس فاونڈیشن اور یو ایس ایڈ کے ذریعہ شروع کی گئی مشترکہ پہل جینڈ ڈیجیٹل ڈیوائڈ کوبند کرنے کیلئے
ریلائنس


ریلائنس فاونڈیشن اور یو ایس ایڈ کے ذریعہ شروع کی گئی مشترکہ پہل جینڈ ڈیجیٹل ڈیوائڈ کوبند کرنے کیلئے تخلیقی حل کی پہچان کرنے میں مدد ملے گی

ممبئی،28ستمبر(ہ س)۔

ریلائنس فاونڈیشن اور یو۔ ایس۔ ایجنسی فار انٹر نیشنل ڈیولیپمنٹ (یو ایس ایڈ) کے ذریعہ کی شروع کی گئی وومین کنیکٹ چیلنج انڈیا کے ذریعہ پورے بھارت میں دس تنظیموں کو گرانٹ حاصل کرنے والوں کے طور پر چنا گیا ہے۔ اس پہل کے ذریعہ جنسی ڈیجیٹل فاصلہ کو دور کرنے میں مدد کرنے کیلئے 11 کروڑ روپے(1;46;5ملین امریکی ڈالر سے زیادہ) کی سرمایہ کاری کی گئی ہے اور اس میں سے،ریلائنس فاونڈیشن نے مختلف مسائل کے تخلیقی حل(انووٹیو سالیوشن) حاصل کرنے بارے منصوبوں کیلئے گرانٹ میں 8;46;5 کروڑ روپے(1;46;1ملین امریکی ڈالر سے زیادہ) کی حمایت کی ہے۔ اس کوشش کے تحت 18 پردیشوں میں 3لاکھ (300,000) سے زیادہ خواتین و لڑکیاں جینڈر ڈیجیٹل ڈیوائڈ کو دور کرنے اور ٹیکنالوجی کے ذریعہ خواتین کے مالی مضبوطی کرن کو بڑھانے کی پہل سے مستفیض ہونگی۔

منتخب تنظیموں کے ناموں کے اعلان کے موقع پر شریمتی نیتا انبانی، فاونڈر چیئرپرسن، ریلائنس فاونڈیشن نے کہا کہ”زندگی کے ہر شعبہ میں خواتین کو مجاذ اور مضبوط بنانا ہمارا مشن رہا ہے۔ جب ہم نے جیو لانچ کیا،تو ہم نے ایک ڈیجیٹل ریوولیوشن کا تصور کیا تھا جو سبھی کیلئے یکساں مواقع فراہم کرے۔ جیو کے ذریعہ، ہم اپنے ملک کے ہر حصے میں موجود لوگوں کو سب سے سستی کنیکٹویٹی فراہم کررہے ہیں۔ ریلائنس فاونڈیشن بھارت میں جنسی ڈیجیٹل فاصلہ کو پاٹنے کی سمت میں یو ایس ایڈ کے ساتھ شراکت داری میں بھی کام کررہا ہے۔ ٹیکنالوجی نابرابری کو دور کرنے اور ختم کرنے کا ایک طاقتور ذریعہ ہے۔ میں تبدیلی کے اس سفر پر ہمارے وومین کنیکٹ چیلنج انڈیا کے دس فاتحین کو مبارکباد دیتی ہوں اور اپنے ساتھ آنے پر ان کا استقبال کرتی ہوں۔“اس کوشش کے تحت گرانٹ حاصل کرنے والی تنظیموں میں انودیپ فاونڈیشن، بیئر فْٹ کالج انٹرنیشنل، سینٹر فار یوتھ اینڈ سوشل ڈیولپمنٹ، فرینڈز ا?ف وومین ورلڈ بنکنگ، نندی فاونڈیشن، ڈیولیپمنٹ ایکشن کیلئے پروفیشنل اسسٹنٹ، سوسائٹی فار ڈیولیپمنٹ اَلٹر نیٹیو، سولیڈریڈاڈ ریجنل ایکسپرٹائز سینٹر، ٹی این ایس انڈیا فاونڈیشن اور زیڈ ایم کیو ڈیولیپمنٹ شامل ہیں۔ سالیوشن مہلا کسانوں، صنعتکاروں، خود مددگار گروپ کے ممبروں کو جنسی ڈیجیٹل فاصلہ کو ختم کرنے کیلئے سماجی و ثقافتی رکاوٹوں کو دور کرنے کیلئے کی جارہی کوششوں کو خطاب کرتے ہیں۔وومین کنیکٹ چیلنج انڈیا کو اگست 2020 میں لانچ کیا گیا تھا 180 سے زیادہ درخواستوں کے پول سے 10تنظیموں کو 12 سے15 مہینوں کی مدت کیلئے 75لاکھ سے 1کروڑ روپے کے بیچ گرانٹ کے ساتھ چنا گیا تھا۔ جنوری 2021 میں یو ایس ایڈ اور ریلائنس فاونڈیشن نے مشترکہ طور سے سالور سمپوزیم کی میزبانی کی، جس میں بھارت میں جینڈر ڈیجیٹل ڈیوائڈ پر غور و خوض کرتے ہوئے صلاحیت کی تعمیر کیلئے سیمی فائنلسٹ اور باہری ماہرین کو ایک ساتھ لایا گیا۔

خواتین میں ہر سال موبائل انٹر نیٹ کے تئیں بیداری بڑھ رہی ہے۔ جبکہ2017 میں بھارت میں صرف19 فیصدی خواتین ہی موبائل انٹرنیٹ کے بارے میں جانتی تھی۔ 2020میں یہ بڑھ کر 35 فیصد ہوگئی۔ ملکیت کے معاملے میں 79 فیصد مردوں کے مقابلہ میں 67 فیصد خواتین کے پاس موبائل فون ہیں۔ برسوں سے، ریلائنس فاونڈیشن کی پہل کا مقصد ڈیجیٹل فاصلہ کو دور کرنا رہا ہے۔ ریلائنس جیو کے ذریعہ 1;46;3 بلین سے زیادہ بھارتیوں نے ملک گیر سطح پر ایک مکمل ڈیجیٹل انقلاب دیکھا ہے جس نے سبھی کی زندگی کو بدل دیا۔ ا?ج، جیو بھارت میں سب سے بڑی ڈیجیٹل سروس پرووائیڈر کمپنی ہے اور 120 ملین خواتین جیو یوزرس کے ساتھ دنیا میں دوسری سب سے بڑی کمپنی ہے، اور ڈیجیٹل فاصلہ کو پاٹنے کیلئے یہ تعداد تیزی سے بڑھ رہی ہے۔

وومین کنیکٹ چیلنج خواتین کی پہنچ اورٹیکنالوجی کے استعمال کے طریقوں کو مثبت طور سے بدلکر روزمرہ کی زندگی میں خواتین کی شراکت داری کو بہتر بنانے کے حل کیلئے ایک عالمی اپیل ہے۔ یو ایس ایڈ نے بھارت میں جنسی ڈیجیٹل فاصلہ کو ختم کرنے والے نظریات کی حمایت کرنے کیلئے ریلائنس فاونڈیشن کے ساتھ شراکت داری کی ہے اور نئے گرانٹ حاصل کرنے والی خواتین کو مالی طور پر مضبوط بنانے کیلئے پچھلے وومین کنیکٹ راونڈ سے مصدقہ حکمت عملیوں پر توجہ مرکوزکریں گے۔

یو ایس اینڈ دنیا کی ممتاز عالمی ترقیاتی ایجنسی ہے اور ترقی کے نتائج کو چلانے والی ایک ترغیبی تنظیم ہے۔ یو ایس ایڈ زندگی کو اوپراٹھانے، براداریوں کی ترقی، جمہوریت کو آگے بڑھانے اور دنیا بھر میں خواتین کو تفویض اختیارات کیلئے چمپئن بنانے میں مدد کرنے کیلئے کام کرتا ہے۔ یو ایس ایڈ کے کام سے یو ایس کی قومی سلامتی اور مالی خوشحالی کو فروغ ملتا ہے، یہ امریکی فراخدلی کو ظاہر کرتا ہے اور ملکوں کو ان کی ترقی کے سفر کو فروغ دینے میں مدد کرتاہے۔آج تک، یو ایس ایڈ کے پاس تین الگ۔ الگ دوروں میں 16 وومین کنیکٹ چیلنج گرانٹ ہیں جو خواتین کی ٹکنالوجی تک رسائی کو محدود کرنے والی رکاوٹوں کو دور کرنے اور16 ملکوں میں تقریباً 6 ملین خواتین میں، نو گرانٹس سے نوازہ گیا اور 2019 میں وومین کنیکٹ راونڈ ٹو کو تین سے نوازہ گیا۔ اس سال کے اوائل میں،وومین کنیکٹ راونڈتھری کیلئے چار فاتحین کا اعلان کیا گیاتھا۔

ہندوستھان سماچاراویس

 rajesh pande