Custom Heading

کیجریوال حکومت اب درخت لگانے کے ساتھ ساتھ جنگلی حیات کے تحفظ پر بھی خصوصی توجہ دے گی: گوپال رائے
نئی دہلی، 28 ستمبر(ہ س)۔ وزیر ماحولیات گوپال رائے نے کہا کہ کیجریوال حکومت اب درخت لگانے کے ساتھ سا
گوپال رائے


نئی دہلی، 28 ستمبر(ہ س)۔

وزیر ماحولیات گوپال رائے نے کہا کہ کیجریوال حکومت اب درخت لگانے کے ساتھ ساتھ جنگلی حیات کے تحفظ پر بھی خصوصی توجہ دے گی۔ 2 اکتوبر سے اسولا بھاٹی وائلڈ لائف سینچوری میں وائلڈ لائف کنزرویشن آگاہی مہم چلائی جائے گی۔ وائلڈ لائف فطرت کے توازن میں بہت حصہ ڈالتی ہے ، فطرت کا بنایا ہوا نظام آہستہ آہستہ ٹوٹ رہا ہے۔ اس توازن کو برقرار رکھنے کے لیے جنگلی حیات کے تحفظ پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 7 سالوں میں کیجریوال حکومت نے 1.70 کروڑ پودے لگائے ہیں۔ اس سال اب تک 22 لاکھ سے زیادہ پودے لگائے گئے ہیں۔ دہلی کا کل رقبہ 1483 مربع کلومیٹر ہے جس میں سے 2019 تک 325 مربع کلومیٹر میں گرین کور تیار کیا گیا ہے جو کہ تقریبا 21.88 فیصد ہے۔وزیر ماحولیات گوپال رائے نے محکمہ جنگلات کے اعلیٰ حکام کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کیا۔ اس دوران انہوں نے کہا کہ تمام مانیٹرنگ ، ایکشن کے ساتھ ساتھ شجرکاری نے بھی دہلی کے اندر آلودگی کو کم کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ قدرتی توازن کا نظام پودوں نے ماحول کو بہتر بنانے کے لیے تیار کیا ہے، اس کے لیے حکومت پچھلے سات سال سے کام کر رہی ہے۔ جس میں اس سال 33 لاکھ پودے لگانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ مہم کا آغاز ون مہوتسو سے ہوا تھا اور اب تک 22 لاکھ 32 ہزار پودے لگانے کا کام مکمل ہو چکا ہے۔ درخت لگانے کی یہ مہم دہلی کے اندر جاری ہے۔ اس میں، 19 محکموں بشمول محکمہ جنگلات ، ڈی ڈی اے این ڈی ایم سی پبلک ورکس ، جنوبی دہلی میونسپل کارپوریشن ، محکمہ تعلیم ، مشرقی دہلی میونسپل کارپوریشن ، مرکزی پبلک ورکس ڈیپارٹمنٹ ، دہلی جل بورڈ ، نارتھ دہلی میونسپل کارپوریشن ، ڈی آئی آئی ڈی سی ، کے ذریعے ایک مشترکہ مہم کے ذریعے دہلی کے اندر درخت لگانے کا کام کیا جا رہا ہے۔ جس میں 33 لاکھ میں سے 22.32 لاکھ پودے لگائے گئے ہیں۔ یہ ہدف مارچ تک مکمل ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ دہلی کے اندر حکومت کے قیام کے بعد آلودگی کے خلاف مہم اروند کیجریوال کی قیادت میں شروع ہوئی۔ 2015-16 میں 16.51 لاکھ 2016-17 میں 24.75 لاکھ ، 2017-18 میں 16 لاکھ ، 2018-19 میں 28 لاکھ ، 2019-20 میں 28.95 ہزار پودے لگائے گئے۔ کیجریوال حکومت کے پچھلے پانچ سالوں کے دوران دہلی کے اندر 1.15 کروڑ پودے لگائے گئے۔ دوسرے ٹرم میں پچھلے سال 32.40 لاکھ پودے اور اس سال 22 لاکھ پودے حکومت نے لگائے ہیں۔ گزشتہ 7 سالوں میں 1.70 کروڑ پودے اروند کیجریوال حکومت نے لگائے ہیں۔ گوپال رائے نے کہا کہ فارسٹ سروے آف انڈیا کے مطابق دہلی سادہ ریاستوں کے زمرے میں آتی ہے۔ پہاڑی ریاستوں میں 60 فیصد گرین بیلٹ ہونی چاہیے۔ جبکہ میدانی علاقوں میں اس ریاست کے کل رقبے کا 20 فیصد سبز علاقہ ہونا چاہیے۔ دہلی نے میدانی ریاست کے پیرامیٹرز کے مطابق 20 فیصد کا ہدف حاصل کر لیا ہے۔ بلکہ اس سے زیادہ گرین کور تیار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2019 کے فاریسٹ سروے آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق دہلی کے اندر 21.88 گرین کور ایریا تیار کیا گیا ہے۔ دہلی کا کل رقبہ 1483 مربع کلومیٹر ہے۔ اس میں سے ، 2019 میں گرین کور 325 مربع کلومیٹر میں تیار کیا گیا ہے۔ اگر ہم گرین ایریا کی ترقی کی ترتیب کو دیکھیں تو 2015 میں گرین کور 299 مربع کلومیٹر تھا جو کہ تقریبا 20.2 فیصد تھا۔ 2017 میں یہ بڑھ کر 305 مربع کلومیٹر ہو گیا جو کہ 20.59 فیصد تھا۔ اس کے بعد 2019 میں یہ بڑھ کر 325 مربع کلومیٹر ہو گیا ہے جو کہ 21.88 فیصد ہے۔ گوپال رائے نے کہا کہ 2019 سے گرین کور کو بڑھانے کا کام کیا گیا ہے۔ ایسی صورتحال میں، دہلی میں 22 فیصد سے زیادہ گرین کور کیا گیا ہے۔ گرین کور میں جو 2015 میں دہلی میں تھا، اب تک تقریبا ڈھائی ہزار ہیکٹر گرین کور میں اضافہ ہوا ہے۔ ہم نے اس کی رپورٹ کے حوالے سے محکمہ کے عہدیداروں کے ساتھ میٹنگ کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مختلف ایجنسیوں کے تمام محکموں کے تھرڈ پارٹی آڈٹ کا کام جاری ہے۔ ہم نے ایک ہدف مقرر کیا ہے کہ ان سب کی بنیادی رپورٹ 1 ماہ کے اندر محکمہ کو پیش کی جائے۔ اس سے اندازہ ہوگا کہ لگائے گئے پودوں کا کتنا فیصد کس علاقے میں زندہ ہے۔ ابھی محکمہ جنگلات کے فاریسٹ سروے آف انڈیا نے ایک پرائمری رپورٹ بھیجی ہے، جس میں کامیابی کی شرح کسی بھی علاقے میں 90 فیصد اور کسی بھی علاقے میں 65 فیصد ہے۔ اس کے علاوہ کسی بھی علاقے میں پچاس سے کم بقا کی شرح ہے۔ اس کی حتمی رپورٹ 1 ماہ کے اندر بھیجی جائے گی جس سے اندازہ ہوگا کہ زیادہ سے زیادہ درخت لگا کر کس علاقے میں بقا کی شرح بہتر ہو سکتی ہے۔وزیر ماحولیات گوپال رائے نے کہا کہ جنگلی حیات گرین بیلٹ کے ساتھ فطرت کے توازن میں بہت اہم کردار ادا کرتی ہے۔ پودے انسانوں کی پیدا کردہ آلودگی کا مشاہدہ کرتے ہیں۔ جنگلی حیات کا سلسلہ بہت زیادہ آلودگی کا مشاہدہ کرتا ہے۔ فطرت کا بنایا ہوا نظام آہستہ آہستہ ٹوٹ رہا ہے۔ قدرتی توازن کو برقرار رکھنے کے لیے دہلی کے محکمہ جنگلات کی جانب سے 2 اکتوبر سے 8 اکتوبر تک ایک ہفتہ جنگلی حیات کے تحفظ کی آگاہی مہم چلائی جائے گی۔ جس کے تحت 2 اکتوبر سے 8 اکتوبر تک اسولا بھاٹی وائلڈ لائف سینچوری میں مختلف پروگرام منعقد کیے جائیں گے۔ تاکہ لوگوں کو حساس بنایا جا سکے۔ سردیوں میں دہلی آلودگی سے دوچار ہے، اس کا قدرتی حل کیسے ہو سکتا ہے؟ اس کے لیے حکومت شجرکاری کے ساتھ ساتھ جنگلی حیات کے تحفظ پر بھی توجہ دے گی۔ اس کے لیے 2 اکتوبر سے اسولا بھاٹی میں آگاہی مہم شروع ہوگی۔

ہندوستھان سماچار/محمد

 rajesh pande