ट्रेंडिंग

Blog single photo

۔(راونڈ اپ)۔۔۔دارالحکومت دہلی میں لاک ڈاون کے درمیان ضروری خدمات جاری رہیں گی

19/04/2021

نئی دہلی ، 19 اپریل (ہ س)۔وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج رات 10 بجے سے 26 اپریل تک دہلی میں چھ دن کے لئے لاک ڈاون کا اعلان کیا ہے۔ دارالحکومت دہلی میں آئندہ ایک ہفتے کے لاک ڈاون کے دوران انتہائی ضروری خدمات بحال رہیں گی۔ 
 پیر کی صبح وزیر اعلی اروند کیجریوال اور لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کی ایک ملاقات کے بعد لاک ڈاون کا اعلان وزیر اعلی کی طرف سےکیا گیا ۔ انہوں نے کہا ہے کہ لاک ڈاون کے دوران دہلی میں غیرضروری طور پر باہر نکلنے کی اجازت نہیں ہے۔ صرف ضروری خدمات سے وابستہ افراد ہی باہر آسکیں گے۔
دہلی حکومت کے ذریعہ جاری کردہ رہنما خطوط کے مطابق ، تمام نجی دفاتر کو گھر سے ہی کام(ورک فرام) کرناہو گا۔ آدھے افسر سرکاری دفاتر میں آسکیں گے۔ اسپتال جانے والوں ، میڈیکل اسٹور جانے والے ، ویکسین لگوانے والوں کو لاک ڈاون میں چھوٹ ملے گی۔ ریلوے اسٹیشن ، ہوائی اڈے ، بس اسٹیشن جانے والے لوگوں کو بھی چھوٹ ملتی رہے گی۔
میٹرو اور بس خدمات آپریشنل رہیں گی لیکن اس میں صرف 50 فیصد مسافروں کو ہی سفر کرنے کی اجازت ہوگی۔ بینک ، اے ٹی ایم دہلی میں کھلے رہیں گے۔ دودھ سبزی اور کیمسٹ کی دکانوں کے ساتھ پٹرول پمپ بھی کھلے رہیں گے۔ مذہبی مقامات کو کھلا رکھا جائے گا ، لیکن کسی عقیدت مند کو جانے کی اجازت نہیں ہے۔ اس کے ساتھ فوڈ ڈلیوری کی سہولت میں رکاوٹ نہیں پیدا کی جائے گی۔
دہلی میں تمام تھیئٹر ، آڈیٹوریم ، اسپاز ، جم ، سوئمنگ پول کو بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ تھیئٹرپچھلی بار کچھ صلاحیت کے ساتھ کھولا گیا تھا۔ پہلے سے طے شادی کے پروگراموں میں چھوٹ ہوگی ، لیکن شادی کی تقریب میں صرف 50 سے کم افراد ہی شرکت کرسکیں گے۔ اس کے لئے بھی ای پاس لینا ہوگا۔
 پرنٹ میڈیا یا الیکٹرانک میڈیا جیسے اہم شعبوں کے لوگوں کو شناختی کارڈ ظاہر کرنے کے بعد ہی باہر سفر کرنے کی اجازت ہوگی۔ ایک ریاست سے دوسری ریاست جانے والی پبلک ٹرانسپورٹ جاری رہے گی۔ اسی کے ساتھ ہی جائزٹکٹ کے ساتھ آنے جانے والے کسی بھی مسافر پر کوئی پابندی نہیں ہوگی۔ 
کسی بھی عوامی ، سیاسی ، مذہبی پروگرام کی تنظیم پر پابندی ہوگی۔کسی بھی اسٹیڈیم میں کوئی میچ یا ایونٹ بغیر شائقین کے کرایا جائے گا۔ اسی کے ساتھ ہی اس پابندی میں ان طلباکو چھوٹ دی جائے گی جو کسی امتحان میں شرکت کرنے جارہے ہیں ، اس کے لئے انہیں ایڈمٹ کارڈ دکھانا لازمی ہوگا۔
دہلی کے تمام ضلع مجسٹریٹ اور پولیس ڈپٹی کمشنر اور متعلقہ تمام افسران کو اس حکم پرسختی سے پابندی کرانے کا حکم دیا گیا ہے۔ اگر کوئی شخص ہدایات کی خلاف ورزی کرتا ہوا پایا جاتا ہے تو ، اس کے خلاف ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کی دفعہ ۔51 سے 60 کی دفعات کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔
قابل ذکر ہے کہ دہلی میں کورونا مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ اتوار کو جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا کے 25 ہزار 462 کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔
وزیر اعلیکیجریوال نے کہا ہے کہ دہلی آئی سی یو بیڈ اور آکسیجن بیدکی کمی سے مسلسل جدوجہد کر رہی ہے ، جس کے پیش نظر دہلی حکومت کے پاس مکمل لاک ڈاون کے علاوہ اور کوئی چارہ نہیں تھا۔پریس کانفرنس میں اروند کیجریوال نے کہا کہ ہم لوگوں سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ لاک ڈاون کی مکمل پیروی کریں اور گھر سے باہر نہ نکلیں۔ آپ نے ہر بار میری اپیل قبول کی ہے ، مجھے پوری امید ہے کہ آپ اس باربھی ہمارا ساتھ دیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ دہلی میں کورونا کی چوتھی لہرآئی ہے۔ اب 25 ہزارکیس تک آرہے ہیں۔ ہمارا صحت کا نظام اس کی وجہ سے دباو¿ میں ہے۔ صورتحال قابو میںر ہے ، اسی وجہ سے لاک ڈاون نافذ کیا جارہا ہے۔
کیجریوال نے کہا کہ اگر ہم سخت اقدامات نہیں کرتے ہیں تو ہمارے اسپتالوں کا نظام درہم برہم ہوجائے گا۔ میں یہ نہیں کہہ رہا کہ ابھی سسٹم کولیپسکرچکا ہے ، لیکن اگر اقدامات نہیں اٹھائے گئے تو یہ ہوگا۔ تارکین وطن مزدوروں سے اپیل کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چھ روزہ کا بہت ہی مختصر لاک ڈاون نافذ کیا جارہا ہے۔ مہاجر مزدوروں سے اپیل ہے کہ وہ دہلی چھوڑکرنہ جائیں۔ ہم ان کی ہر ممکنہ مدد کریں گے۔
ہندوستھان سماچار





 
Top