بھارت سیواشرم کے سنت کا نام لے کر ممتا نے لگائے سنگین الزام، سنیاسی نے کہا-وناش کالے، وپریت بدھی ہوجاتی ہے
کولکاتا، 19 مئی (ہ س)۔ لوک سبھا انتخابات کے پانچویں مرحلے کی مہم کے آخری دن ہفتہ کو وزیر اعلیٰ م
بھارت سیواشرم کے سنت کا نام لے کر ممتا نے لگائے سنگین الزام، سنیاسی نے کہا-وناش کالے، وپریت بدھی ہوجاتی ہے


کولکاتا، 19 مئی (ہ س)۔

لوک سبھا انتخابات کے پانچویں مرحلے کی مہم کے آخری دن ہفتہ کو وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے بھارت سیواشرم سنگھ، رام کرشنا مشن اور اسکوان جیسی معروف مذہبی تنظیموں پر سنگین الزامات عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان تنظیموں کے کچھ سادھو انتخابات میں بی جے پی کی مدد کر رہے ہیں۔ بھارت سیواشرم کے مشہور سنیاسی پردیپتانند مہاراج عرف کارتک مہاراج کا نام لیتے ہوئے ممتا نے کہا کہ وہ ٹی ایم سی کو دھمکی دے رہے ہیں۔ کارتک مہاراج نے اتوار کو اس پر ردعمل ظاہر کیا۔ ’’ہندوستھان سماچار‘‘ سے خصوصی بات چیت میں انہوں نے کہا - ’’وناش کالے، وپریت بدھی ہوجاتی ہے۔ (یعنی: جب بھی انسان کسی ناگفتہ بہ حالت میں پھنس جاتا ہے اور اس کی تباہی قریب ہوتی ہے تو اس کی عقل خراب ہو جاتی ہے) اب ممتا بنرجی اور ان کی پارٹی کی تباہی کا وقت آ گیا ہے، اسی لیے وہ سنتوں اور سنیاسیوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔‘‘

کارتک مہاراج نے کہا کہ پچھلے سال گنگا ساگر میں جس وحشیانہ انداز میں پورے ملک کے سنتوں اور سنیاسیوں کو مارا گیا وہ پورے ملک نے دیکھا ہے۔ اب ریاست کے وزیر اعلیٰ کی طرف سے یہاں بھاگوت کے کام میں لگے سنیاسیوں کو بغیر کسی بنیاد کے براہ راست نشانہ بنانا یہ ظاہر کرتا ہے کہ تباہی کا وقت آگیا ہے۔

کارتک مہاراج نے کہا، ’’انتخاب کے دن، میں سیدھا بوتھ پر گیا اور اپنا ووٹ ڈالنے کے بعد آشرم واپس آیا۔ ہاں ہم نے ٹی ایم سی کے ایم ایل اے ہمایوں کبیر کے خلاف بیان ضرور دیا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ فرقہ وارانہ باتیں کرتے تھے۔ وزیر اعظم مودی کے خلاف بھی تبصرہ کر چکے ہیں۔ وہ بھاگیرتھی میں ہندووں کوبہانے کرنے کی بات کرتا ہے۔

ہندوستھان سماچار//محمد


 rajesh pande