کینیا کے اسپرنٹر راجرز کویموئی پر بلڈ ڈوپنگ کے الزام میں چھ سال کی پابندی
نیروبی، 18 مئی (ہ س)۔ کینیا کے اولمپیئن اور سابق انڈر- 20 ورلڈ 10000 میٹر چیمپیئن راجرز کویموئی پر ا
Kenyan runner Kwemoi banned for 6 years for doping


نیروبی، 18 مئی (ہ س)۔ کینیا کے اولمپیئن اور سابق انڈر- 20 ورلڈ 10000 میٹر چیمپیئن راجرز کویموئی پر ایتھلیٹکس انٹیگریٹی یونٹ ( اے آئی یو) نے بلڈ ڈوپنگ کی وجہ سے چھ سال کی توسیعی پابندی عائد کر دی ہے۔

ژنہوا کی رپورٹ کے مطابق ،24 اپریل 2024 کو دستخط کیے گئے اور جمعہ کو اے آئی یو کے ذریعے عام کیے گئے فیصلے میںکوئموئی کو اپنے ایتھلیٹ بائیولوجیکل پاسپورٹ (اے بی پی) میں خرابیوں کی وجہ سے بلڈ بوسٹر استعمال کرنے کا قصوروار پایا گیا۔

واضح ہو کہ ایتھلیٹ بائیولوجیکل پاسپورٹ ایک اینٹی ڈوپنگ ٹول ہے جو ڈوپنگ کے اثرات کو ظاہر کرنے کے لیے منتخب حیاتیاتی عوامل پر نظر رکھتا ہے۔27 سالہ اسپرنٹر کو پولینڈ میں 2016 کی ورلڈ انڈر- 20 چیمپئن شپ میں شاندار فتح کے بعد مشرقی افریقی ملک میں طویل فاصلے پر ٹریک دوڑ کا مستقبل سمجھا جاتا تھا۔

ژنہوا کے مطابق، لندن میں ڈیوڈ شارپ کی سربراہی والے تین ججوں کے پینل نے انہیں بلڈ ڈوپنگ کا مجرم پایا۔ 18 جولائی 2016 اور 8 اگست 2023 کے درمیان کوئموئی کے تمام خطاب، ریکارڈز اور کمائی کو بھی ضبط کر لیا جائے گا۔ اس کے علاوہ انہیں اپنے مقدمے کی کارروائی کے اخراجات کے طور پر عالمی ایتھلیٹکس کو 3,000 امریکی ڈالر ادا کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔

کوئموئی، جنہوں نے 2022 میں استنبول ہاف میراتھن کورس میں 59:15 کا ریکارڈ قائم کیا، نے لندن کے ایک وکیل کے ذریعے اپنے مقدمے کی بحث کے لیے تین ججوں کی سماعت کا انتخاب کیا، جنہوں نے اے آئی یو کی طرف سے اپنے منفی تجزیاتی نتائج کے بارے میں شکایت کئے جانے کے بعدان کی مفت میں نمائندگی کی گئی۔

ججوں نے ان کے دفاع کی اس دلیل کو مسترد کر دیا کہ ان کے اے بی پی میں موسمیاتی تبدیلیوں، اونچائی اور دیگر ماحولیاتی عوامل سے متاثر ہونے والے جسمانی ردعمل کی وجہ سے قدرتی تغیرات کا نتیجہ تھیں، جبکہ ماہرین کے پینل نے ان کی اس دلیل سے اتفاق کیا کہ اونچائی اے بی پی کی اقدار کو متاثر کرتی ہے۔ ، پھر بھی انہوں نے اہم سنجیدہ حالات کی نشاندہی کی جو ”اتھلیٹکس کے اہم ترین مقابلوں“ کی قیادت میں خون کی ہیرا پھیری کی طرف اشارہ کرتے ہیں۔

کوئموئی کے پروفائل سے ٹورنامنٹ کی تیاری کے دوران بلڈ ڈوپنگ کی کئی خصوصیات کا انکشاف ہوا، اور اس بات کا بہت زیادہ امکان تھا کہ کوئی ممنوعہ مادہ یا طریقہ استعمال کیا گیا ہو۔

اس طرح کوئموئی کو جان بوجھ کر، منظم اور ممنوعہ ڈوپنگ نظام میں شامل ہو کر اینٹی ڈوپنگ اصول کی خلاف ورزیوں کا مجرم پایا گیا۔

کوئموئی کی نااہلی کی مدت معیاری چار سے مزید دو سال تک بڑھا دی گئی، یعنی انکی پابندی 2029 میں ختم ہو گی۔ وہ پولینڈ میں 2016 انڈر 20 چیمپیئن شپ میں ایک نوجوان کے طور پر بین الاقوامی منظر پر آگئے، جہاں انہوں نے 27:25.23 میں 10,000 میٹر میں سونے کا تمغہ جیتا تھا۔

کوئموئی نے پھر آسٹریلیا میں 2017 کے گولڈ کوسٹ گیمز میں اسی فاصلے پر کامن ویلتھ کا کانسہ کا تمغہ جیتا اور دوحہ 2019 ورلڈ چیمپئن شپ میں چوتھے نمبر پر رہے ۔

ٹوکیو 2020 میں، وہ 25 لیپ دوڑ میں 7ویں نمبر پر رہے۔کوئموئی آخری بار کینیا کے رنگوں میں یوجین، اوریگون میں 2022 ورلڈ چیمپیئن شپ میں 15 ویں نمبر پر رہے۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande