جیکی شراف کے نام ، تصاویر اور آواز کا غلط استعمال روکنے کے لیے دہلی ہائی کورٹ کا فیصلہ محفوظ
نئی دہلی ، 15 مئی (ہ س)۔ دہلی ہائی کورٹ کے جسٹس سنجیو نرولا کی بنچ نے اداکار جیکی شراف کے نام ، آو
دہلی ہائی کورٹ


نئی دہلی ، 15 مئی (ہ س)۔

دہلی ہائی کورٹ کے جسٹس سنجیو نرولا کی بنچ نے اداکار جیکی شراف کے نام ، آواز اور تصاویر کے ساتھ ان کے ذاتی سامان کے غیر مجاز استعمال پر پابندی لگانے کے مطالبے پر اپنا فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔ ہائی کورٹ نے 14 مئی کو مدعا علیہان کو نوٹس جاری کیا تھا۔سماعت کے دوران جیکی شراف کے وکیل پروین آنند نے کہا کہ وہ اپنے نام ، تصاویر اور آواز کے غلط استعمال کو روکنا چاہتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پیسہ کمانے کے لیے ان کی شخصیت کے پہلوو¿ں کا غلط استعمال کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کی اجازت کے بغیر ان کے ذاتی حقوق کو کمرشل کیا جا رہا ہے۔ ان کے مزاحیہ مواد کو ہنسانے کے لیے نہیں بلکہ پراڈکٹس بیچنے کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔

درخواست میں جیکی شراف ، جیکی ، جگو دادا ، بھیدو وغیرہ جیسے ناموں اور ان کی تصاویر ، آواز کے ساتھ ساتھ ان کی شخصیت کے دیگر پہلوو¿ں کے غلط استعمال پر پابندی لگانے کی مانگ کی گئی تھی۔ جیکی شراف نے گوگل کی ملکیت والی کمپنی ٹینور اور GIF بنانے والی کمپنی Giphy کو اپنے نام ، تصویر ، آواز اور ان کے لیے استعمال کیے گئے ناموں کا غیر مجاز استعمال کرنے سے روکنے کی کوشش کی۔ درخواست میں ٹیکنالوجی اور الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اس طرح کے غلط استعمال کو روکنے کی استدعا کی گئی تھی۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande