آئین کو بدلنے کی کوشش کرنے والی حکومت کو بدل دیں گے، شراوستی میں گرجے اکھیلیش یادو
پچپیڑوا(بلرام پور)،15مئی (ہ س)۔ سماج وادی پارٹی کے قومی صدر/سابق وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو نے پچپیڑوا
آئین کو بدلنے کی کوشش کرنے والی حکومت کو بدل دیں گے، شراوستی میں گرجے اکھیلیش یادو


پچپیڑوا(بلرام پور)،15مئی (ہ س)۔

سماج وادی پارٹی کے قومی صدر/سابق وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو نے پچپیڑوا کے بشن پور ٹنٹنوا میں انتخابی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جو حکومت آئین کو بدلنا چاہتی ہے، ہمیں انہیں بدلنا ہوگا، اگر آئین محفوظ رہے گا تبھی جمہوریت باقی رہے گی۔ اس کے لیے ہمیں ڈبل انجن والی حکومت کو اکھاڑ پھینک آئین اور جمہوریت کو بچانا ہے۔ آئین ہی زندگی گزارنے کا ذریعہ ہے۔بی جے پی کے 400 پار کے نعرہ کا مذاق اڑاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 400پار کا نعرہ لگانے والوں کو 140 سیٹیں بھی نہیں ملیں گی۔ یہ الیکشن ترقی اور مستقبل کا الیکشن ہے، آئین اور ریزرویشن کو بچانے میں بہوجن سماج کی مسلسل حمایت مل رہی ہے۔ وہ اپنا ووٹ ضائع نہ کریں۔ سابق وزیراعلیٰ نے شدید گرمی میں سننے اور تعاون کرنے پربڑی تعداد میں موجود لوگوں کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وہ لوک سبھا کے امیدوار رام شرومنی ورما اور اسمبلی ضمنی انتخابات میں راکیش یادو کے لیے مدد مانگ رہے ہیں۔ اس خطے کے عوام غریبوں کے مقبول ترین لیڈر کو کھو چکے ہیں۔ علاج کے دوران ڈاکٹر کے منع کرنے کے باوجود بھی وہ میٹنگز میں شرکت کرتے تھے۔ ایس پی کے دور میں ڈاکٹر ایس پی یادو اپنے محکمے کی ذمہ داریاں بہت ہی ذمہ داری کے ساتھ انجام دیتے تھے۔ جیسے ہی ووٹنگ کا ساتواں مرحلہ آئے گا عوام کا غصہ اپنے عروج پر ہوگا۔ بی جے پی کے تمام دعوے ناکام ہوجائیں گے۔ میں علاقے کے لوگوں اور ان کسانوں کو مبارکباد دینا چاہتا ہوں جنہوں نے اپنی لڑائی کے زور پر بی جے پی کو زیر کرنے کا کام کیا ہے۔

انڈیا الائنس کسانوں کو ہر فصل کی قیمت کے لیے ایم ایس پی فراہم کرے گا۔ صنعتکاروں کے کئی کروڑ روپے کے قرضے معاف کر دیے گئے لیکن کسانوں کے لاکھوں روپے کے قرضے معاف نہیں کیے گئے بلکہ ان کے ساتھ دھوکہ کیا گیا۔ مخلوط حکومت تمام کسانوں کے قرضے معاف کرے گی۔ امتحانی پرچے لیک ہونے والے تمام امتحانات منسوخ۔ اس کا اثر لوک سبھا میں نظر آئے گا۔ اگنی ویر سسٹم کو ختم کر کے مستقل نوکریاں دی جائیں گی۔ اگر بی جے پی حکومت دوبارہ اقتدار میں آتی ہے تو خاکی وردی میں سروس کو بھی تین سال تک بڑھا دیا جائے گا۔ مخلوط حکومت بنتے ہی راشن کا معیار اور مقدار بڑھے گی۔ مفت میں آٹا اور ڈیٹا دیں گے۔ لیپ ٹاپ بھی چلتا رہے گا۔ بی جے پی نے نقل کرکے جو لیپ ٹاپ دیا تھا وہ بھی ردی بن گیا ہے۔ بوری کی چوری ہوئی، مہنگائی کی مثال دیکھ لیں، پارلے جی بسکٹ مہنگائی کے ساتھ چھوا ہوگیا۔ امیدوار رام شرومنی ورما نے کہا کہ جس طرح سے اسمبلی اور لوک سبھا انتخابات ہو رہے ہیں، اسے جیتنا ضروری ہے، بی جے پی کی جملے بازی میں نہ پڑیں۔انہوں نے انڈیا اتحادکی حکومت بننے کا دعویٰ کیا۔ راکیش یادو نے کہا کہ ان کے والد ڈاکٹر ایس پی یادو نے عوام کے لیے اپنی جان قربان کی۔ میری زندگی کا مقصد ان کی ترقی کے لیے پولی ٹیکنک ، ایگریکلچرل سائنس سینٹر ، بجلی کا سب اسٹیشن ، گرلز انٹر کالج ، بہت سے چھوٹے بڑے پل ، سڑکوں کا جال بچھانا ، گرلز کالج کی تعمیر ، دیہات کی بجلی بنانا ہے۔ اندھیرے کو ہٹا نا ہے۔سوشلزم کی روشنی کو جگانے کا کام ہمارے والد محترم کا تحفہ ہے۔ لوگوں کو سوشلسٹ پنشن ملتی تھی، ہمارے والد نے ہمیشہ علاقے کے لیے جدوجہد کی ہے یہ اسی کا نتیجہ ہے۔ میں اپنے والد کے نظریے کو آگے بڑھانے کے لیے کام کروں گا۔ پروگرام کو سابق ایم ایل اے اندرانی ورما ، رام ساگر اکیلا ، مسعود خان سابق ایم ایل اے ، عارف انور ہاشمی سابق ایم ایل اے ، انور محمود سابق ایم ایل اے ، ڈاکٹر راجیش یادو ، نورالحسن خان ، انوراگ یادو سماجی کارکن ، پرشورام ورما ، آفاق احمد ، شاہد خان ، اختر حسین ، آدرش یادو ، ڈاکٹراشتیاق احمد نے بھی خطاب کیا۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande