کانگریس ملک کو انتشار میں ڈالنا چاہتی ہے ، دراندازوں کی حوصلہ افزائی کر رہی ہے: مودی
دہرادون ، 02 اپریل (ہ س)۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ کانگریس ہندوستان کو عدم استحکام اور انار
مودی


دہرادون ، 02 اپریل (ہ س)۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ کانگریس ہندوستان کو عدم استحکام اور انارکی کی طرف لے جانا چاہتی ہے۔ کانگریس نے ملک کے بہادر فرزندبپن راوت تک کی توہین کی تھی۔ ایسی کانگریس سے حب الوطنی کی توقع نہیں کی جا سکتی۔

منگل کو رودر پور کے دیو بھومی میں منعقدہ وجے شنکھ ناد ریلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ کانگریس خوش کرنے والی پارٹیوں میں اتنی مگن ہو گئی ہے کہ وہ قومی مفاد کے بارے میں کبھی سوچ بھی نہیں سکتی۔ یہی کانگریس دراندازی کو فروغ دیتی ہے۔ جب بی جے پی سی اے اے کے ذریعے ماں بھارتی پر یقین رکھنے والوں کو ہندوستانی شہریت دیتی ہے تو کانگریس کو سب سے زیادہ تکلیف ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس خطے کے لوگ یہ بھی جانتے ہیں کہ پاکستان اور بنگلہ دیش سے آنے والے مہاجرین میں زیادہ تر دلت خاندان ، سکھ خاندان ، بنگالی خاندان ہیں ، لیکن کانگریس ان لوگوں کو شہریت دینے کی مخالفت کر رہی ہے۔اگر کانگریس کمزوری نہ دکھاتی تو کسی کو بھارت کی سرحدوں کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے کی ہمت نہ ہوتی۔

وزیر اعظم مودی نے کہا کہ اتراکھنڈ کی سرزمین گرو نانک دیو ، گرو گوبند سنگھ اور ا±داسی سنت گرو رام رائے سے متعلق ہے۔ کانگریس نے ملک کو اس طرح تقسیم کیا کہ گرو نانک کی جائے پیدائش بھی ہم سے چھین لی گئی۔ جبکہ بی جے پی حکومت نے کرتارپور کوریڈور بنا کر عوام کی زندگی آسان کر دی ہے۔ملک کے سرحدی گاو¿ں کانگریس کے لیے آخری گاو¿ں ہیں ، لیکن بی جے پی کے لیے پہلا گاو¿ں ہے۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande