اگر کیجریوال کی گرفتاری کے بعد بھی آپ نہیں ٹوٹی تو بی جے پی مزید چار لیڈروں کو جیل بھیجنے کی تیاری کر رہی ہے:دلیپ پانڈے
نئی دہلی، 2 اپریل(ہ س)۔ عام آدمی پارٹی کو تباہ کرنے کے بی جے پی کے منصوبے بار بار ناکام ثابت ہو رہے
دلیپ پانڈے


نئی دہلی، 2 اپریل(ہ س)۔

عام آدمی پارٹی کو تباہ کرنے کے بی جے پی کے منصوبے بار بار ناکام ثابت ہو رہے ہیں۔ اس کے بعد بھی دہلی میں بی جے پی کا آپریشن لوٹس جاری ہے۔ اے اے پی کے سینئر لیڈر اور کابینی وزیر آتشی کو بھی بی جے پی میں شامل ہونے کی پیشکش موصول ہوئی ہے۔ اس پر آپ کے سینئر لیڈر دلیپ پانڈے نے سخت موقف اختیار کیا۔جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو یقین تھا کہ وزیر اعلی اروند کیجریوال کی گرفتاری کے بعد عام آدمی پارٹی بکھر جائے گی، لیکن ایسا نہیں ہوا۔ اس لیے بی جے پی اب عام آدمی پارٹی کو ختم کرنے کے لیے آتشی، سوربھ بھردواج، راگھو چڈھا اور درگیش پاٹھک کو گرفتار کرنا چاہتی ہے۔ اس مقصد کے لیے کابینہ وزیر آتشی کو پیشکش کی گئی کہ اب آپ کے پاس کوئی آپشن نہیں بچا ہے۔ آپ کے خلاف بھی ای ڈی کی کارروائی کی جائے گی، لیکن اگر آپ بی جے پی میں شامل ہوتی ہیں تو آپ خود کو بچا سکتے ہیں۔پارٹی ہیڈکوارٹر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر اور ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ دہلی میں آپریشن لوٹس کو کامیاب بنانے کی کوشش میں بی جے پی کئی بار ناکام رہی ہے۔ لیکن اس کے باوجود عام آدمی پارٹی کے وزراءاور ایم ایل اے کو کسی بھی طرح سے دھمکانے کی مسلسل کوششیں جاری ہیں۔ اسی سلسلے میں ایک چونکا دینے والی حقیقت سامنے آئی ہے جس نے عام آدمی پارٹی کی پیشین گوئی کو سچ ثابت کر دیا ہے۔ عام آدمی پارٹی کے رہنما اور دہلی حکومت کے کابینہ وزیر آتشی سے بھی ایک بار بی جے پی نے رابطہ کیا تھا۔ ان سے کہا گیا کہ دیکھو ہمارے پاس عام آدمی پارٹی کے بڑے لیڈر ہیں یا نہیں۔وزیراعلیٰ نے کسی کو گرفتار کیا حالانکہ ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں تھا۔ اب عام آدمی پارٹی کے پاس کوئی آپشن نہیں بچا ہے۔ آپ کے پاس صرف ایک راستہ ہے جس پر آپ خود کو بچا سکتے ہیں، اور وہ راستہ آپ کو بی جے پی کی طرف لے آتا ہے۔

ہمارے ساتھ شامل ہوں اور اپنے آپ کو اور اپنے کیریئر کو بچائیں۔انہوں نے مزید کہا کہ بی جے پی کا اندازہ تھا کہ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی گرفتاری کے بعد عام آدمی پارٹی کو ختم ہو جانا چاہیے تھا۔ وزیر اعلیٰ کی گرفتاری کے بعد بی جے پی نے ایک طرح سے عام آدمی پارٹی کے ڈیتھ نوٹ پر دستخط کر دیے تھے۔ لیکن اس کی آمریت اور وزیراعلیٰ کو دیکھ کر ان کے ہوش اڑ گئے۔رام لیلا میدان میں اروند کیجریوال کی گرفتاری کے خلاف لاکھوں لوگوں کو احتجاج کرتے دیکھا، وہاں ان کی ریاضت ناکام ہوگئی۔ بی جے پی سمجھ رہی تھی کہ انہوں نے عام آدمی پارٹی کی پہلی اور دوسری لائن کو گرفتار کر لیا ہے۔ ان کے مطابق اگر پارٹی کی باقی قیادت کو بھی گرفتار کر لیا گیا تو پارٹی تباہ ہو جائے گی۔ مگر وہ بھول گئے کہ جب عام آدمی پارٹی کا ہر ایم ایل اے، وزیر، کونسلر اور کارکن عوام کی خدمت کے اس مقدس سفر میں شامل ہوا تو وہ تمام توقعات ترک کر کے سر پر کفن باندھ کر شامل ہوئے تھے۔آپ لیڈر دلیپ پانڈے نے کہا کہ جب ستیندر جین، منیش سسودیا، سنجے سنگھ اور وزیر اعلی اروند کیجریوال کی گرفتاری بھی کارکنوں کے حوصلے کو نہیں توڑ سکی، اب اگلی صف کے لیڈروں کو گرفتار کرنے کی سازش رچی جا رہی ہے۔ اطلاع مل رہی ہے کہ پورے مہینے چھاپے مارے جائیں گے۔ جس میں پہلے آتشی اور پھر راگھو چڈھا، سوربھ بھردواج اور درگیش پاٹھک کو گرفتار کیا جائے گا۔ ایسا کرنے کے لیے انہیں پہلے بھی کسی بنیاد کی ضرورت نہیں تھی اور بی جے پی کے مطابق انہیں آج بھی کسی بنیاد اور ثبوت کی ضرورت نہیں ہے۔ بی جے پی لیڈر بڑی بے شرمی سے آتے ہیں اور سوال کا جواب دیئے بغیر چلے جاتے ہیں کہ سرتھ ریڈی60 کروڑ روپے کیوں لیے گئے، اس کیس میں جس شخص کو ملزم بنایا گیا اس سے چندہ کیوں لیا گیا؟ انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ بی جے پی نے ایک اور ملزم کو لوک سبھا کا ٹکٹ کیوں دیا۔

آپ لیڈر دلیپ پانڈے نے کہا کہ جب دہلی والوں نے اپنے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو، جو عوام کے لیے لڑتے ہیں، کو جیل میں دیکھا تو وہ برداشت نہیں کر سکے۔ جب انہوں نے دیکھا کہ بی جے پی کے ہاتھ اب وزیراعلیٰ اروند کیجریوال کے گلے تک پہنچ رہے ہیں تو دہلی کے لوگ مشتعل ہوگئے اور بڑی تعداد میں رام لیلا میدان میں جمع ہوئے تھے۔ تب بی جے پی سمجھ گئی کہ صرف اتنا کرنا کافی نہیں ہے۔ بی جے پی کو سمجھنا چاہئے کہ کچھ کرنا کافی نہیں ہے۔ آپ عام آدمی پارٹی کے وزراءاور ایم ایل اے کو توڑنے کے لیے جو بھی کریں، ہم بابا صاحب امبیڈکر اور بھگت سنگھ کے شاگرد ہیں اور ہمارے لیڈر اروند کیدریوال کے سکھائے ہوئے سپاہی ہیں۔ایک بار جب انہوں نے کل عہد لیا تھا، جس طرح وہ کل عوام کے لیے کھڑے ہوئے تھے، وہ مستقبل میں بھی بی جے پی کی آمریت اور ناانصافی کے خلاف لڑیں گے۔ اور اسی طرح ملک اور دہلی کے عوام کی خدمت کرتے رہیں گے۔

ہندوستھان سماچار/افصل


 rajesh pande