31 مارچ تک ملک میں 302.02 لاکھ ٹن چینی کی پیداوار :آئی ایس ایم اے
نئی دہلی ، 02 اپریل (ہ س)۔ چینی کی پیداوار کے محاذ پر اچھی خبر ہے۔ موجودہ چینی مارکیٹنگ سال 2023-2
31 مارچ تک ملک میں 302.02 لاکھ ٹن چینی کی پیداوار :آئی ایس ایم اے


نئی دہلی ، 02 اپریل (ہ س)۔

چینی کی پیداوار کے محاذ پر اچھی خبر ہے۔ موجودہ چینی مارکیٹنگ سال 2023-24 میں ، ملک میں چینی کی پیداوار 31 مارچ 2024 تک 302.02 لاکھ ٹن تک پہنچ گئی ہے۔ گزشتہ چینی مارکیٹنگ سال میں اسی تاریخ کو 300.77 لاکھ ٹن چینی کی پیداوار ہوئی تھی۔ شوگر ملوں کی تنظیم انڈین شوگر ملز ایسوسی ایشن (آئی ایس ایم اے) نے یہ اطلاع دی ہے۔

آئی ایس ایم اے نے منگل کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ چینی مارکیٹنگ سال 2023-24 میں 31 مارچ تک چینی کی پیداوار 302.02 لاکھ ٹن تھی۔ گزشتہ چینی مارکیٹنگ سال کی اسی تاریخ کو 300.77 لاکھ ٹن چینی کی پیداوار ہوئی تھی۔ اس طرح سے اب تک 1.25 لاکھ ٹن مزید چینی پیدا ہو چکی ہے۔ انڈسٹری باڈی نے حکومت سے موجودہ شوگر سیزن میں 10 لاکھ ٹن چینی برآمد کرنے کی اجازت دینے کی درخواست کی ہے۔

انڈسٹری باڈی آئی ایس ایم اے نے کہا کہ بھارت میں گنے کی کرشنگ سیزن 2023-24 اپنے آخری مرحلے میں پہنچ گیا ہے۔ کیونکہ شوگر ملوں کی بڑی تعداد نے آپریشن بند کرنا شروع کر دیا ہے۔ اسما کے مطابق اس سال ملک بھر میں کام کرنے والی شوگر ملوں کی تعداد 210 سے زائد تھی جب کہ گزشتہ سال اسی تاریخ کو 187 ملیں کام کر رہی تھیں۔ اس کے ساتھ ساتھ 322 شوگر ملوں نے اب کرشنگ آپریشن بند کر دیا ہے جبکہ گزشتہ سال اسی عرصے میں 346 بند کر دی گئی تھیں۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ صنعتی ادارہ آئی ایس ایم اے نے مارچ کے وسط میں چینی کے موجودہ سیزن 2023-24 کے لیے چینی کی پیداوار کے تخمینے کو 320 لاکھ ٹن کر دیا تھا ، جب کہ مقامی کھپت 285 لاکھ ٹن ہونے کی توقع ہے۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande