رفح میں جنگی منصوبہ شروع کرنے سے پہلے شہریوں کا تحفظ کیا جائے:امریکی صدر کا مطالبہ
واشنگٹن،12فروری(ہ س)۔ امریکی صدر جوبائیڈن نے اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو سے کہا ہے کہ رفح میں وسیع
امریکی صدر


واشنگٹن،12فروری(ہ س)۔

امریکی صدر جوبائیڈن نے اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو سے کہا ہے کہ رفح میں وسیع پیمانے پر فوجی کارروائی کرنے سے پہلے انتہائی گنجان آباد ہو چکی شہری آباد کا بچاو¿ یقینی بنایا جائے۔ جوبائیڈن نے کہا شہری آبادی کے لیے منصوبہ جنگی کارروائی سے پہلے بنایا جائے۔واضح رہے غزہ میں اسرائیلی جنگ کے پانچویں مہینے کے دوران ایک طرف اسرائیل اپنے انٹیلی جنس چیف کے ذریعے یرغمالی رہا کرانے کی غرض سے جنگ بندی کی تجاویز پیش کر رہا ہے تو دوسری جانب غزہ کی اس جنگ کو انتہائی جنوب میں واقع رفح شہر تک پھیلانے کی تیاری کر رہا ہے۔ اس سلسلے میں وائٹ ہاو¿س نے اپنا نکتہ نظر نیتن یاہو کو پہنچا دیا ہے۔

اقوام متحدہ کے پیش کردہ اعدادو شمار کے مطابق رفح میں اس وقت 14 لاکھ پناہ گزین فلسطینی پناہ لے چکے ہیں۔ بہت بڑی تعداد خیموں رہنے پر مجبور ہے مگر سب کے لیے تو ابھی تک یہ سہولت فراہم کرنا ممکن ہوا ہے اور نہ ہی خوراک و ادویات کی فراہمی بدرجہ اتم پوری کی جا پا رہی ہیں۔صدر جوبائیڈن کے مطابق رفح میں اس وقت جنگی کارروائی شروع نہیں کی جانا چاہیے جب تک رفح میں عام شہریوں کے لیے قابل بھروسہ قسم کا منصوبہ نہیں بنا لیا جاتا ہے۔ وائٹ ہاو¿س کے مطابق جوبائیڈن اور نیتن یاہو کی باہم فون پر اتوار کی صبح بات چیت ہوئی ہے۔ہفتے کی شام نیتن یاہو نے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ اگر رفح سے حماس کی 4 بٹالینوں کا صفایا نہ کیا تو حماس کی جنگ میں شکست مشکل ہو جائے گی۔ غزہ میں جاری جنگ کے دوران صدر جوبائیڈن کی یہ فون کال پہلی فون کال ہے جس کا اس طرح اظہار کیا گیا ہے۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande