سابق وزیر اعلیٰ اور سینئر لیڈر اشوک چوہان نے کانگریس کا ہاتھ چھوڑا، بی جے پی میں شامل ہونے کا امکان
ممبئی، 12 فروری (ہ س)۔ مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس کے سینئر لیڈر اشوک شنکر راو¿ چوہان
سابق وزیر اعلیٰ اور سینئر لیڈر اشوک چوہان نے کانگریس کا ہاتھ چھوڑا، بی جے پی میں شامل ہونے کا امکان


ممبئی، 12 فروری (ہ س)۔

مہاراشٹر کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس کے سینئر لیڈر اشوک شنکر راو¿ چوہان نے پیر کو کانگریس پارٹی کی بنیادی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا۔ توقع ہے کہ وہ بہت جلد بھارتیہ جنتا پارٹی میں شامل ہو جائیں گے۔

اشوک چوہان نے پیر کی صبح اسمبلی اسپیکر راہل نارویکر سے ملاقات کی اور ایم ایل اے کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا لیکن سرکاری اعلان نہیں کیا۔ اس کے بعد انہوں نے کانگریس کے ریاستی صدر نانا پٹولے کو خط لکھا اور پارٹی کی بنیادی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا۔ اس خط میں اشوک چوہان نے خود کو سابق ایم ایل اے بتایا ہے۔ اس لیے یہ واضح ہے کہ انہوں نے ایم ایل اے کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

اشوک چوہان کی طرف سے ابھی تک کوئی باضابطہ اطلاع نہیں دی گئی ہے لیکن بی جے پی لیڈروں کے بیانات سے کہا جا رہا ہے کہ وہ بہت جلد بی جے پی میں شامل ہو جائیں گے۔ بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ پرتاپ پاٹل چکھلیکر نے دعویٰ کیا ہے کہ اشوک چوان بہت جلد بی جے پی میں شامل ہوجائیں گے۔ اس کے علاوہ سات سے آٹھ ایم ایل اے بھی ان کے ساتھ بی جے پی میں شامل ہو سکتے ہیں۔

بی جے پی کے ریاستی صدر چندر شیکھر باونکولے نے کہا کہ کانگریس میں بڑے پیمانے پر ناراضگی ہے۔ ہم ملند دیوڑا، بابا صدیقی کی مثال دیکھ سکتے ہیں۔ اشوک چوہان کے بی جے پی میں شامل ہونے کے بارے میں ابھی تک کوئی اطلاع نہیں ہے، لیکن اگر اشوک چوہان پارٹی میں آتے ہیں تو ان کا استقبال کیا جائے گا۔ باونکولے نے کہا کہ کانگریس کے بہت سے لیڈر مستقبل قریب میں بی جے پی میں شامل ہونے والے ہیں۔ یہ سبھی کانگریس کی پالیسیوں سے ناراض ہیں اور وزیر اعظم مودی کی قیادت میں کام کرنا چاہتے ہیں۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande