وزیراعلیٰ کے سنگ بنیاد کے 9 سال بعد بھی نہیں بنا اسپتال ،زمین واپس کرنے کی کسانوں نے اپیل کی
بیگوسرائے ، 24 مئی (ہ س)۔ ایک طرف زمین کی کمی کی وجہ سے اسپتال اور اسکول کی عمارت کی تعمیر میں رکاوٹ
وزیراعلیٰ کے سنگ بنیاد کے 9 سال بعد بھی نہیں بنا اسپتال ،زمین واپس کرنے کی کسانوں نے اپیل کی


بیگوسرائے ، 24 مئی (ہ س)۔ ایک طرف زمین کی کمی کی وجہ سے اسپتال اور اسکول کی عمارت کی تعمیر میں رکاوٹیں آرہی ہیں تو دوسری طرف بہار کے سرکاری افسر کی بے حسی کی وجہ سے وزیر اعلیٰ نتیش کمار کا خواب بھی چکنا چور ہو گیا ہے۔

معاملہ مرکزی وزیر گری راج سنگھ کے پارلیمانی حلقہ بیگوسرائے کا ہے۔ جہاں اسپتال کی اراضی پر برسوں سے قبضہ ہے لیکن اراضی دینے والے کی درخواست کے باوجود انتظامیہ اس طرف توجہ نہیں دے رہی۔ وزیراعلیٰ کی جانب سے تجاوزات کا انکشاف نہ ہونے کے باعث سنگ بنیاد رکھنے کے 9 سال بعد بھی اسپتال کی عمارت کی تعمیر شروع نہ ہو سکی۔ ڈی ایم بھی باقاعدگی سے میٹنگ میں افسران کو تجاوزات سے نجات دلانے کے لیے کارروائی کرنے کی ہدایات دے رہے ہیں لیکن افسر کچھ سننے کو تیار نہیں۔ اب صورتحال یہ ہو گئی ہے کہ زمین کے عطیہ دہندہ نے تجاوزات سے آزاد نہ ہونے کی وجہ سے پریشان ہو کر ڈی ایم سے اسپتال کے لیے دی گئی اپنی زمین واپس کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

بیگوسرائے ضلع کی شمالی سرحد پر واقع گڑھ پورہ کے رہنے والے کسان سشیل سنگھانیہ نے ڈی ایم کو درخواست دی ہے، جس میں پرائمری ہیلتھ سنٹر گڑھ پورہ کے لیے آباؤ اجداد کی دی گئی زمین کو تجاوزات سے پاک کرانے کی درخواست کی گئی ہے اور اگر ایسا نہیں ہوتا ہے۔ تو زمین واپس لینے کی بات کہی ہے ۔ سشیل سنگھانیہ نے بتایا کہ میری دادی مالی دیوی نے اس وقت گڑھ پورہ میں ایک ذیلی صحت مرکز بنانے کے لیے زمین دی تھی ، جو صرف ایک دہائی قبل پرائمری ہیلتھ سنٹر بن چکا ہے۔ لیکن دی گئی اراضی میں سے لوگوں نے دو بیگھہ، چار کٹھہ، سات ڈھور زمین پر برسوں سے قبضہ کر رکھا ہے۔

اس سلسلے میں کئی بار گڑھ پورہ کے زونل افسر کو تجاوزات سے پاک کرنے کے لیے درخواستیں دیں ، دھرنا دیا لیکن کوئی کارروائی نہیں ہوئی۔ اب سرکل افسر کی طرف سے کہا جا رہا ہے کہ پی ایچ سی کے پاس سرکاری زمین نہیں ہے ، ہم اسے خالی نہیں کریں گے۔ میرے پاس زمین کے کاغذات نہیں ہیں ، آپ کے پاس آپ کی زمین ہے، اسے خالی کر دیں۔ افسران ایسے اہم کام کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے ہیں۔ ہماری سابقہ اقدار وقار اور سماجی ذمہ داری کو ادا کرتی رہی ہیں۔ دادا ادملال سنگھانیہ نے گڑھ پورہ ریلوے اسٹیشن بنانے کے لیے کافی جدوجہد کی اور اسٹیشن بنوایا۔ گڑھ پورہ میں پی ایچ سی اور کیٹل اسپتال بنانے کے لیے اپنی قیمتی زمین دی ، لیکن آج معاشرہ اور نظام دونوں لاتعلق ہیں۔ اراضی دینے والا مارواڑی سوسائٹی کے ذمہ داروں سے التجا کر رہا ہے لیکن اس کے باوجود کوئی نہیں سن رہا ہے۔

ہندوستھان سماچار/ افضل/سلام


 rajesh pande