Custom Heading

تاریخ کے اوراق میں 15 مئی: انگریزوں کو ناکوںچنے چبانے والا شہید سکھ دیو
15 مئی کا ملک اور دنیا میں ایک اہم مقام ہے۔ یہ تاریخ عالمی فورم میں ہر قسم کی ہلچل کی گواہ ہے۔ یہ ما
تاریخ کے اوراق میں 15 مئی: انگریزوں کو ناکوںچنے چبانے والا شہید سکھ دیو


15 مئی کا ملک اور دنیا میں ایک اہم مقام ہے۔ یہ تاریخ عالمی فورم میں ہر قسم کی ہلچل کی گواہ ہے۔ یہ مادر ہند کے لال شہید سکھ دیو کا یوم پیدائش ہے، جنہوں نے صرف 24 سال کی عمر میں عظیم قربانی دی تھی۔ شہید بھگت سنگھ اور شہید راج گرو سکھ دیو کے اس عزیز دوست کا پورا نام 'سکھ دیو تھاپر' تھا۔ شہید سکھ دیو 15 مئی 1907 کو گوپرا (لدھیانہ) پنجاب میں پیدا ہوئے۔ تینوں نے اپنی مختصر سی زندگی میں انگریزوں کو ناکو چنے چبایا تھا۔ 23 مارچ 1931 کو ان تینوں ہیروز کو لاہور سینٹرل جیل میں ایک ساتھ پھانسی دی گئی۔ 1919 کے جلیانوالہ باغ کے ہولناک قتل عام نے سکھ دیو کے ذہن پر بہت اثر کیا۔

لائل پور کے سناتن دھرما ہائی اسکول سے میٹرک پاس کرنے کے بعد سکھ دیو نے لاہور کے نیشنل کالج میں داخلہ لیا اور یہیں ان کی ملاقات بھگت سنگھ سے ہوئی۔ ان دونوں کے لیے تاریخ کے استاد 'جے چندر ودیالنکر' تھے۔ ان میں انقلاب کے بیج بوئے۔ اسکول کے منیجر بھائی پرمانند ایک معروف انقلابی تھے۔ جب 1926 میں لاہور میں 'نوجوان بھارت سبھا' قائم ہوئی تو سکھ دیو کو اس کا چیف کنوینر بنایا گیا۔ سکھ دیو کی زندگی میں بڑا موڑ اس وقت آیا جب ستمبر 1928 میں دہلی کے فیروز شاہ کوٹلہ کے کھنڈرات میں شمالی ہند کے سرکردہ انقلابیوں کی ایک خفیہ میٹنگ ہوئی۔ اس سلسلے میں ایک مرکزی کمیٹی تشکیل دی گئی۔ اس تنظیم کا نام 'ہندوستان سوشلسٹ ریپبلکن آرمی' رکھا گیا۔سکھ دیو کو پنجاب کی تنظیم کی ذمہ داری سونپی گئی۔ بھگت سنگھ پارٹی کے سیاسی رہنما تھے اور سکھ دیو منتظم تھے۔ انہوں نے مل کر برطانوی حکومت کے خلاف آواز بلند کی۔ سکھ دیو نے بھگت سنگھ، راج گرو، بٹوکیشور بٹ، چندر شیکھر آزاد کے ساتھ مل کر برطانوی حکومت کی بنیاد ہلادی۔ اسی دوران سائمن کمیشن کی مخالفت پر لاٹھی چارج میں لالہ جی کی موت ہو گئی۔ سکھ دیو اور بھگت سنگھ نے بدلہ لینے کا فیصلہ کیا۔ سکھ دیو اس سارے منصوبے کا ماسٹر مائنڈ تھا۔ مرکزی مجلس عاملہ کے آڈیٹوریم میں بم اور پمفلٹ پھینکے گئے۔ اس کے بعد چاروں طرف سے گرفتاریوں کا سلسلہ شروع ہوگیا۔ لاہور میں بم بنانے والی فیکٹری پکڑی گئی۔ اس میں سکھ دیو بھی دوسرے انقلابیوں کے ساتھ پکڑا گیا۔

عالمی واقعات

1610: پیرس کی پارلیمنٹ نے لوئس XIII کو فرانس کا بادشاہ مقرر کیا۔

1811: پیراگوئے نے ا سپین سے آزادی کا اعلان کیا۔

1905: نواڈا، امریکہ میں لاس ویگاس کا قیام۔

1918: امریکہ میں پہلی فضائی میل سروس شروع ہوئی۔

1925: پہلا عربی کمیونسٹ اخبار شروع ہوا۔

1930: دنیا کی پہلی خاتون ایئر ہوسٹس ایلن چرچ نے آکلینڈ-شکاگو کی پرواز میں اڑان بھری۔

1935: ماسکو میٹرو عوام کے لیے کھول دی گئی۔

1940: میک اور ڈک میکڈونلڈ نامی دو بھائیوں نے سان برنارڈینو، کیلیفورنیا میں میکڈونلڈز ریستوراں شروع کیا۔

1948: آسٹریلیا نے ایسیکس کے خلاف کرکٹ میچ میں ایک دن میں 721 رنز بنانے کا عالمی ریکارڈ قائم کیا۔

1957: برطانیہ نے اعلان کیا کہ بحرالکاہل میں کیے گئے تجربات کے تحت پہلے ہائیڈروجن بم کا تجربہ کیا گیا۔

1958: سوویت یونین نے Sputnik-3 کا آغاز کیا۔

1988: سوویت یونین نے افغانستان سے ایک لاکھ 15 ہزار فوجیوں کو واپس بلا لیا۔

1995: ایلیسن گارگریبز آکسیجن سلنڈر کے بغیر ایورسٹ کی چوٹی پر پہنچنے والی پہلی خاتون بن گئیں۔

1999: کویت کی حکومت نے خواتین کو پارلیمانی انتخابات میں ووٹ دینے کا حق دیا۔

2001: اٹلی میں دائیں بازو کے اتحاد کے لیے اکثریت۔

2002: اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے عراق پر پابندیوں کی منظوری دی۔

2003: عراق جنگ میں امریکی افواج کے کمانڈر ٹومی فریکس کے خلاف برسلز کی عدالت میں جنگی مقدمہ دائر۔

2004: آرسنل فٹ بال کلب انگلش پریمیئر لیگ میں ایک بھی میچ ہارے بغیر چیمپئن بننے والی پہلی ٹیم بن گئی۔

2005: 20 سال بعد ہندوستان کا طیارہ کینیڈا میں اترا۔

2008: ہندوستانی نڑاد منجولا سود برطانیہ میں میئر بننے والی پہلی ایشیائی خاتون بنیں۔

2008: سری لنکا نے دہشت گرد تنظیم ایل ٹی ٹی ای پر پابندی کو مزید دو سال کے لیے بڑھا دیا۔

پیدائش

1817: ایک عالم اور مذہبی رہنما دیویندر ناتھ ٹھاکرکی پیدائش۔

1892: ایک ہندوستانی سیاست دان ہری ونائک پٹاسکرکی پیدائش۔

1907: انقلابی شہید سکھ دیوکی پیدائش۔

1922: بھارتی اداکار نذیرکی پیدائش۔

1922: ایک جاپانی مصنف جاکوچو ساتوچی کی پیدائش۔

1923: کامیڈین جانی واکرکی پیدائش۔

1926: ہندوستانی بحریہ کا ایک بہادر افسرمہندر ناتھ ملاکی پیدائش۔

1933: سابق چیف الیکشن کمشنر ٹی این سیشن کی پیدائش۔

1937: ریاستہائے متحدہ امریکہ کی خاتون رہنمامیڈلین البرائٹ کی پیدائش۔

1965: اداکارہ مادھوری دکشت کی پیدائش۔

1991: فرانس کی پہلی خاتون وزیر اعظم ایڈتھ کریسن کی پیدائش۔

موت

1958: مشہور مورخ یدوناتھ سرکارکی موت۔

1988: سیاست دان رادھیکا رنجن گپتاکی موت۔

1993: آرمی چیف کوڈنڈیرا مدپا کریپاکی موت۔

2010: سابق صدر بھیرون سنگھ شیخاوت کی موت۔

2011: کسان رہنما مہندر سنگھ ٹکیت کی موت۔

دن

1993: اقوام متحدہ نے خاندانوں کا عالمی دن منانے کا فیصلہ کیا۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande