Custom Heading

گیہوں کی برآمدات پر پابندی، نوٹیفکیشن جاری
نئی دہلی، 14 مئی (ہ س)۔ روس-یوکرین جنگ کے درمیان آٹے کی بڑھتی ہوئی قیمت کے پیش نظر مرکزی حکومت نے فو
Ban on export of wheat, notification issued


نئی دہلی، 14 مئی (ہ س)۔ روس-یوکرین جنگ کے درمیان آٹے کی بڑھتی ہوئی قیمت کے پیش نظر مرکزی حکومت نے فوری طور پرگیہوں کی برآمدات پر پابندی عائد کردی ہے۔ گیہوںکو فری کیٹیگری سے محدود کیٹیگری میں رکھا گیا ہے۔ حکومت نے یہ قدم ملک کی غذائی تحفظ کے مدنظر اٹھایا ہے۔ اس حوالے سے رات گئے نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا۔

ڈائریکٹوریٹ جنرل آف فارن ٹریڈ نے نوٹیفکیشن میں کہا کہ مختلف وجوہات کی بنا پرگیہوں کی برآمدات روکنا پڑی ہے۔ درحقیقت روس اور یوکرین کے درمیان جاری جنگ کی وجہ سے بین الاقوامی مارکیٹ میں اس کی قیمت میں تقریباً 40 فیصد اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے بھارت سے اس کی برآمدات میں اضافہ ہوا ہے۔ گیہوں کی مانگمیں اضافے کے باعث مقامی مارکیٹ میں گیہوں اور آٹے کی قیمتوں میں زیادہ اضافہ ہوا ہے۔

گیہوںکی برآمدات پر پابندی کے باوجود ضرورت مند ممالک کو برآمدات جاری رہیں گی۔ درحقیقت کئی بڑی گیہوں پیدا کرنے والی ریاستوں میں سرکاری خریداری کا عمل سست رفتاری سے چل رہا ہے اور ہدف سے کم گیہوں خریداری گئی ہے۔ اس سال گیہوںکی پیداوار کم رہنے کی توقع ہے۔ قابل ذکر ہے کہ بین الاقوامی مارکیٹ میں زیادہ مانگ کی وجہ سے کسانوں کو مارکیٹ میں کم از کم امدادی قیمت (ایم ایس پی) سے زیادہ قیمت مل رہی ہے۔

تاجروں کے مطابق اس سال ملک میں گیہوںکی پیداوار 9.5کروڑٹن رہنے کا تخمینہ ہے۔ حکومت نے 105کروڑ ٹن گیہوں کی پیداوار کا تخمینہ لگایا ہے۔ کانڈلا پورٹ پر گیہوں کی قیمت 2550 روپے فی کوئنٹل ہے۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande