لداخ میں صنعتی اراضی کے حصول کی پالیسی کو جنوری میں حتمی شکل دی جائے گی
لداخ میں صنعتی اراضی کے حصول کی پالیسی کو جنوری میں حتمی شکل دی جائے گی جموں،7 دسمبر (ہ س)۔ مرکز کے
لداخ میں صنعتی اراضی کے حصول کی پالیسی کو جنوری میں حتمی شکل دی جائے گی


لداخ میں صنعتی اراضی کے حصول کی پالیسی کو جنوری میں حتمی شکل دی جائے گی

جموں،7 دسمبر (ہ س)۔ مرکز کے زیر انتظام علاقہ لداخ نے مضبوط صنعتی بنیاد بنانے کے لیے کمر کس لی ہے۔ اس حوالے سے صنعتی اراضی کی الاٹمنٹ پالیسی کا مسودہ فریقین سے تبصرے اور تجاویز طلب کرنے کے لیے عوامی ڈومین میں رکھا گیا ہے اور اسے اگلے سال جنوری کے مہینے میں حتمی شکل دی جائے گی۔ اس کے ساتھ ہی لداخ قومی معیشت میں ایک جگہ بنائے گا اور قومی اور بین الاقوامی منڈیوں میں اپنی مصنوعات کے لیے ایک جگہ بنائے گا۔

مرکز کے زیر انتظام علاقے کی تشکیل سے پہلے، لداخ جموں و کشمیر کی صنعتی پالیسی 2016 کی پیروی کر رہا تھا، جس نے صنعتی زمین کی الاٹمنٹ کا بنیادی طریقہ کار فراہم کیا تھا۔ سابقہ جموں و کشمیر ریاست کو دو مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں تقسیم کرنے کے بعد، لداخ کو ایک وسیع صنعتی اراضی الاٹمنٹ پالیسی کی ضرورت ہے جو اس خطے میں بڑی صنعتی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لیے ایک جامع صنعتی لینڈ بینک کے تعاون سے صنعتی زمین کی الاٹمنٹ کے نظام میں ایک مؤثر فریم ورک فراہم کرے گی۔ صنعتی اراضی کی الاٹمنٹ پالیسی کا مسودہ اس یقین کے ساتھ تیار کیا گیا ہے کہ یہ لداخ کو قومی معیشت میں جگہ بنانے اور قومی اور بین الاقوامی منڈیوں میں اس کی مصنوعات کے لیے جگہ بنانے میں انتظامیہ کی مدد کرے گی۔

لداخ انتظامیہ کے ایک سنئیر افسر نے مزید کہا کہ ہم ایک مضبوط صنعتی بنیاد بنانا چاہتے ہیں ۔مسودے کے مطابق، پالیسی کا مقصد صنعتی استعمال کے لیے زمین کی الاٹمنٹ کے لیے منصفانہ اور شفاف طریقہ کار کی پیروی کرنا ہے اور لداخ کے صحت مند مستقبل کی ترقی کے لیے معقول مدلل غور و فکر کی بنیاد پر کاروباریوں کو منصفانہ زمین کی الاٹمنٹ کو یقینی بنانا ہے‘‘۔

پالیسی میں پائیدار صنعت کاری اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے ذریعے جامع ترقی کے حصول اور اقتصادی خوشحالی لانے کا بھی تصور کیا گیا ہے۔ یہ پالیسی اپنے نوٹیفکیشن کی تاریخ سے 10 سال تک جاری رہے گی۔ تاہم، اسٹیک ہولڈرز کے تاثرات کے تنقیدی جائزے اور دائرہ کار میں تبدیلی کی بنیاد پر وقتاً فوقتاً پالیسی کا جائزہ لیا جائے گا۔ پالیسی کے بنیادی مقاصد میں خطے کے مختلف شعبوں کی ترقیاتی ضروریات کو پورا کرتے ہوئے زمینی وسائل کے بہترین اور معقول استعمال کو یقینی بنانا شامل ہے۔

اس کا مقصد بے روزگار نوجوانوں کے لیے روزگار کے مواقع پیدا کرنا اور مخصوص شعبے کی صنعتوں کے لیے نئے مواقع پیدا کرنا ہے۔ انٹرپرائزز میں مزید سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی، فروغ اور سہولت فراہم کرنا اور خطے میں ایک مضبوط، جوابدہ اور متحرک کاروباری ماحول بنانا شامل ہے۔ مزید یہ کہ انتظامیہ لداخ میں انڈسٹریل اسٹیٹس کو سہولیات فراہم کرنا چاہتی ہے جیسے کہ بلاتعطل بجلی کی فراہمی، پانی کی سہولیات، پارکس،باغوں اور سڑکوں کی دیکھ بھال، اسٹریٹ لائٹس وغیرہ قابل ذکر ہے ۔

ہندوتھان سماچار

/شہزاد


 rajesh pande