عالمی بینک نے ہندوستان کی شرح نمو 6.9 فیصد تک بڑھا دی
نئی دہلی ، 06 دسمبر (ہ س)۔ معیشت کے محاذ پر حکومت کو راحت کی خبر ہے۔ عالمی بینک نے مالی سال 2022-2
ورلڈ بینک


نئی دہلی ، 06 دسمبر (ہ س)۔

معیشت کے محاذ پر حکومت کو راحت کی خبر ہے۔ عالمی بینک نے مالی سال 2022-23 کے لیے ہندوستان کی مجموعی گھریلو پیداوار (جی ڈی پی) کی شرح نمو 6.9 فیصد تک بڑھا دی ہے۔ اس سے قبل عالمی بینک نے جی ڈی پی کی شرح نمو 6.5 فیصد بتائی تھی۔

عالمی بینک نے منگل کو جاری کردہ اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ امریکہ ، یورو ایریا اور چین میں ہونے والی پیش رفت کا اثر ہندوستان پر بھی نظر آرہا ہے۔ عالمی بینک نے اپنی تازہ ترین رپورٹ میں کہا ہے کہ ہندوستان کی معیشت رواں مالی سال میں 6.9 فیصد کی شرح سے ترقی کرے گی۔ تاہم مالی سال 2021-22 کی شرح نمو 8.7 فیصد کے مقابلے میں یہ ایک بڑی کمی ہے۔بھارت سے متعلق اپنی تازہ ترین رپورٹ میں ورلڈ بینک نے کہا کہ اس کے باوجود حکومت رواں مالی سال میں 6.4 فیصد مالیاتی خسارے کا ہدف حاصل کر لے گی۔ عالمی بینک کا اندازہ ہے کہ مالی سال 2022-23 میں ہندوستان میں افراط زر کی شرح 7.1 فیصد رہے گی۔

قابل ذکر ہے کہ مالی سال 2022-23 کی دوسری سہ ماہی میں ملک کی جی ڈی پی کی شرح نمو 6.3 فیصد رہی ہے۔ اس سے قبل سوئٹزرلینڈ کی بروکریج کمپنی یو بی ایس انڈیا نے بھی رواں مالی سال میں ہندوستان کی جی ڈی پی کی شرح نمو 6.9 فیصد رہنے کا اندازہ لگایا تھا۔ تاہم ریٹنگ فچ نے 7 فیصد کی شرح نمو کا اندازہ لگایا ہے۔ آر بی آئی نے رواں مالی سال کے لیے شرح نمو 7.2 فیصد رہنے کا بھی اندازہ لگایا ہے۔

ہندوستھان سماچارمحمدخان


 rajesh pande