سپریم کورٹ نے ارکان اسمبلی کی گرتی ہوئی اخلاقیات پر تشویش کا اظہار کیا۔
نئی دہلی، 06 دسمبر (ہ س)۔ سپریم کورٹ نے قانون سازوں کی گرتی ہوئی اخلاقیات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔
سپریم کورٹ نے ارکان اسمبلی کی گرتی ہوئی اخلاقیات پر تشویش کا اظہار کیا۔ 


نئی دہلی، 06 دسمبر (ہ س)۔ سپریم کورٹ نے قانون سازوں کی گرتی ہوئی اخلاقیات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ گوا قانون ساز اسمبلی کے 12 ایم ایل اے کو نااہل قرار دینے کے مطالبے پر سماعت کے دوران جسٹس ایم آر شاہ کی سربراہی والی بنچ نے کہا کہ ہمارا اخلاق کس حد تک گرے گا۔

یہ عرضی گوا کانگریس کے صدر گریش چاڈونکر نے دائر کی ہے۔ سماعت کے دوران چاڈونکر کی جانب سے کہا گیا کہ حال ہی میں کانگریس کے 9 ایم ایل اے نے بی جے پی میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے اس معاملے سے جڑے بڑے قانونی پہلو پر غور کرنے کا مطالبہ کیا۔ جس پر جسٹس ایم آر شاہ نے کہا کہ ہماری اخلاقیات کہاں تک گریں گی۔ عدالت نے کہا کہ معاملے کی سماعت میں کوئی جلدی نہیں ہے۔

چاڈونکر کی درخواست میں گوا قانون ساز اسمبلی کے 12 ایم ایل اے کو نااہل قرار دینے کی مانگ کی گئی ہے۔ یہ ایم ایل اے کانگریس اور مہاراشٹر وادی گومانتک پارٹی چھوڑ کر بھارتیہ جنتا پارٹی میں شامل ہو گئے تھے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ گوا قانون ساز اسمبلی کے اسپیکر نے غیر قانونی طور پر منحرف ایم ایل اے کو سیکورٹی فراہم کی۔ اس سے قبل 24 فروری کو بامبے ہائی کورٹ نے ان ایم ایل اے کو نااہل قرار دینے کا مطالبہ مسترد کر دیا تھا۔ ہائی کورٹ نے گوا قانون ساز اسمبلی کے اسپیکر کے فیصلے کو برقرار رکھا تھا۔

ہندوستھان سماچار


 rajesh pande