تاج محل میں نماز ادا کرنے کے خلاف ہندوؤں کا احتجاج
آگرہ، 24 نومبر (ہ س) ۔آگرہ کے تاج محل میں نماز ادا کرنے کے خلاف ہندو تنظیموں نے احتجاج کیا۔ تنظیم
تاج محل میں نماز ادا کرنے کے خلاف ہندوؤں کا احتجاج


آگرہ، 24 نومبر (ہ س) ۔آگرہ کے تاج محل میں نماز ادا کرنے کے خلاف ہندو تنظیموں نے احتجاج کیا۔ تنظیم نے اس معاملے کو لے کر کلکٹریٹ میں مظاہرہ کیا۔ احتجاج کے دوران ہندو تنظیموں کے لوگوں نے ڈی ایم کو میمورنڈم سونپا۔ میمورنڈم میں تاج محل میں نماز ادا کرنے والے شخص کی گرفتاری کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

آگرہ ضلع میں تاج محل میں نماز پڑھنے کے معاملات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ اتوار کو ہی تاج محل میں نماز ادا کرنے والے ایک شخص کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سے معاملہ پھر سے گرم ہو گیا ہے۔ یہ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سے کئی ہندو تنظیموں نے کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے مظاہرہ کیا ہے۔ اس کے تحت جمعرات کو ایک ہندو تنظیم نے کلکٹریٹ میں مظاہرہ کیا۔ اس کے بعد لوگوں نے ڈی ایم کو میمورنڈم سونپا اور کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔ اس کے ساتھ ویڈیو میں نماز پڑھتے نظر آنے والے نوجوان کی جلد از جلد گرفتاری کا مطالبہ کیا۔

ماضی میں بھی ہندو تنظیم اکھل بھارت ہندو مہاسبھا نے محکمہ آثار قدیمہ کے دفتر کا گھیراؤ کیا اور وزیر اعظم کو اس معاملے پر ایک میمورنڈم سونپا۔ اس کے ساتھ ہی منگل کو ایک ہندو تنظیم کے لیڈر نے کہا کہ اس معاملے کو لے کر عدالت میں درخواست دائر کی جائے گی۔ اس کے ساتھ ہی سی آئی ایس ایف نے تھانہ تاج گنج میں ویڈیو میں نظر آنے والے نوجوانوں کے خلاف شکایت بھی دی ہے۔

ہندوستھان سماچار//سلام


 rajesh pande