राष्ट्रीय

Blog single photo

کانگریس کا کام بس مخالفت کرنا، چاہے آرٹیکل 370 ہو یا رافیل: امت شاہ

09/10/2019

کانگریس کا کام بس مخالفت کرنا، چاہے آرٹیکل 370 ہو یا رافیل: امت شاہ
کیتھل، 09 اکتوبر (ہ س)۔
 وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ کانگریس نے آرٹیکل 370 ہٹانے کے خلاف ووٹ ڈال کر ملک مخالف پارٹی ہونے کا ثبوت دیا ہے۔ راہل گاندھی بتائیں کہ وہ آرٹیکل 370 ہٹانے کے حق میں ہیں یا اس کے خلاف؟
امت شاہ بدھ کو ہریانہ کے ضلع کیتھل میں منعقد وجے سنکلپ ریلی میں عوامکے جم غفیر سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے جو کام گزشتہ 70 سال میں نہیں کیا، مودی حکومت نے پارلیمنٹ کے پہلے ہی سیشن میں کر دکھایا۔ اتنا ہی نہیں کشمیر میں آرٹیکل 370 ہٹانے کی بات ہو یا 35 اے ہٹانے کی بات، تین طلاق کا بل ہو یا رافیل خریداری کی بات، ان تمام موضوعات پر کانگریس کے پیٹ میں پتہ نہیں کیوں درد شروع جاتا ہے۔جبکہ ہم نے اپنے انتخابی وعدے ایک ملک، ایک پرچم اور ایک وزیر اعظم کے عزم کو پورا کیا ہے۔ ہم نے ایک ہی ملک میں دو قانون سازی، دو وزیر، دو آئین، دو پرچم، دو آئین کو ہٹانے کا کام کیا ہے۔
شاہ نے کہا کہ بی جے پی کی مخالفت کرنا کانگریس کی پرانی فطرت ہے۔ کانگریس کو پارٹی سے اوپر اٹھ کر ملک کے مفاد میں اٹھائے جانے والے فیصلوں کا خیر مقدم کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ مودی جی بیرون ملک میں جب جاتے ہیں تو سرےجوالا کے پیٹ میں درد شروع ہو جاتا ہے۔ آج منوہر لال کی قیادت میں ریاست میں 70 ہزار نوجوانوں کو میرٹ کی بنیاد پر نوکریاں ملی ہیں۔ آج پرچی اور خرچی کا وقت نہیں ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہریانہ میں ملازمتوں کا بازار لگتا ہے۔پہلے ذات کے نام پر نوکریاں فروخت کی جاتی تھیںمگر آج ملازمتوں میں سے مکمل طور پر رشوت خوری کو ختم کیا ہے۔ مےرٹ میں آنے والے لوگوں کو نوکری مل رہی ہے۔ آج ٹر نسفر کی بات ہو یا پھر جرم کی بات ہو، تمام تبدیلیاںبی جے پی حکومت سے ہی ممکن ہوئی ہے۔
شاہ نے کہا کہ کچھ وقت پہلے ہریانہ پورے ملک میں بیٹیوں کے قتل کے لئے بدنام تھا، لیکن مودی جی کی بیٹی بچاو¿ مہم کے چلانے سے آج ہریانہ نے بیٹی بچاو¿ بیٹی پڑھاو کے نعرے کو بامعنی کیاہے۔ ملک میں ایک منفرد پہل کی ہے۔ آج مودی جی کے نعرے سے بیٹیوں نے نام روشن کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صحت کے نقطہ نظر سے وزیر اعظم کا آیوشمان منصوبے کے تحت ملک 50 کروڑ غریبوں کو، 10 کروڑ خاندانوں کو 5 لاکھ تک مفت علاج ملنا شروع ہوا ہے۔
انہوں نے اپیل کی کہ ایک بار پھر منوہر لال کو سی ایم بنا دو۔ منوہر لال کی قیادت میں کروڑوں کی اسکیموں کو لاگو کیا گیا ہے۔ کیتھل کے اندر پاسپورٹ سروس مرکز قائم کیا گیا۔ انبالہ سے حصار تک چار لین بنانے کا کام ہماری حکومت نے پورا کیا۔ 30 سال کے بعد ہریانہ میں نہروں کا جال بچھایا گیا۔ ملک کی سرحدوں پر اگر قربانی دینے کی بات کریں تو ہریانہ ملک کی پہلی ریاست ہے جہاں سے بہت زیادہ تعداد میں ہمارے بہادر جوان ملک کی خدمت کر رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ آنے والے پانچ سالوں میں کسانوں اور خریداروں کی حالت بہتر بنانے کے لئے منوہر لال حکومت کام کرے گی۔ ہماری حکومت نے 4700 کروڑ کے قرضے معاف کئے۔ کھلاڑیوں کی پالیسی بنانے کی بات ہو یا پھر اسپورٹس پالیسی، ہریانہ نے ان کے لئے خصوصی پالیسی بنائی ہے۔ پوری دنیا میں مودی جی کی وجہ سے ملک کا وقار بلندہوا ہے۔کانگریس کے ایک رہنما نے الزام لگایا کہ مودی جی زیادہ بیرون ملک سفر کرتے ہیں، مگر جب ہم نے اس کی جانچ کی تو پتہ چلا کہ مودی جی سے زیادہ منموہن سنگھ بیرون ملک کا سفر کرتے تھے۔ مگر اس وقت منموہن سنگھ وہ دو صفحات کو پڑھتے تھے جو سونیا گاندھی انہیں لکھ کر دیتی تھیں۔ مگر آج مودی دنیا کے کسی بھی کونے میں چلے جائیں، لوگ مودی مودی کے نعروں سے ان کا استقبال کرتے ہیں۔ اتنا ہی نہیں امریکہ کے صدر ٹرمپ بھی مودی کے قائل ہو گئے۔
انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت این آر سی کے تحت ایک ایک گھسپیٹھئے کو ملک سے باہر نکالنے کا کام کرے گی۔ شاہ نے کیتھل اسمبلی کے ارد بی جے پی امیدواروں کو کامیاب بنانے کی اپیل کی اور ریاست میں پھر سے بی جے پی حکومت بنانے کا عزم دہراتے ہوئے کہا کہ اس بار 75 پار کے نعرے کو کامیاب بنا دو۔ ریاست میں ترقی کی گنگا بہا دی جائے گی۔
ہندوستھان سماچار



 
Top