राष्ट्रीय

Blog single photo

وزیراعظم کویہ احساس ہی نہیں ہے کہ کسانوں میں کتنی بے چینی اور ناراضگی ہے : طارق انور

30/11/2020

 وزیر اعظم کو یہ احساس ہی نہیں ہے کہ کسانوں میں کتنی بے چینی اور ناراضگی ہے : طارق انور 
نتیش کمار کا کردار بڑے بھائی سے چھوٹے بھائی میں بدل گیا
کٹیہار، 30 نومبر (ہ س)۔ 
کانگریس کے جنرل سکریٹری اور سابق مرکزی وزیر طارق انور نے پیر کو  کہا کہ نئے زرعی قوانین کوواپس لینے اور فصل کے ایم ایس پی کی گارنٹی کے مطالبہ کو لیکر کسانوں کا مظاہرہ آہستہ آہستہ  بھیانک شکل اختیار کر رہا ہے۔ وزیر اعظم کو اس بات کا اندازہ نہیں ہورہا ہے یا وہ سمجھ نہیں پارہے ہیں کہ کسانوں میں کتنی بے چینی اور ناراضگی ہے۔ 
طارق انور نے کہا کہ کسانوں نے ایک بارپھرفیصلہ کیا ہے کہ جب تک حکومت قانون کو واپس نہیں لیتی ہے وہ پیچھے نہیں ہٹیں گے ۔ اس بل کے خلاف پورے ملک سے خاص طور پردہلی، پنجاب ، ہریانہ اور اتر پردیش ریاستوں سے بڑے پیمانے پر کسان دہلی پہنچ رہے ہیں۔ کسانوں کو روکنے کے لئے تمام تر کوششیں کی گئیں ۔ حکومت کی طرف سے ہر طرح  کے مظالم اورتشدد کی گئی  اس کے باوجود کسان اس کو قبول نہیں کررہے ہیں۔ وزیر اعظم کو اس کا احساس نہیں ہے کیونکہ 'من کی بات' میں انہوں نے پھر اس بات کا اعادہ کیا اور کہا کہ منظور شدہ بل کسانوں کے مفاد میں ہے۔
حکومت بہار کو کتنی مستقل اور مضبوط مانتے ہیں کہ سوال پرانہوں نے کہا کہ سب جانتے ہیں کہ اس انتخاب میں انتظامیہ اور الیکشن کمیشن کا غلط استعمال ہوا۔ انتخابات سے پہلے اور اس کے بعد تمام ایگزٹ پول کاماننا تھا کہ بہار میں عظیم اتحاد کی حکومت بنے گی۔ اب اس میں کیا ہیرا پھیری ہوئی معلوم نہیں۔ پھر بھی ہم لوگوں کا ماننا ہے کہ یہ حکومت زیادہ دنوں تک قائم نہیں رہ سکے گی۔ کیونکہ حکومت کے اندر مخالفت ہے۔ آنے والے وقت میں وزیر اعلی نتیش کمار کو بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ پہلے سے اب معاملات بدل چکے ہیں ۔ اب ایک طرح سے ان کا کردار بڑے بھائی سے چھوٹے بھائی میں بدل  گیاہے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی نے سازش کے تحت نتیش کمار کو کمزور کرنے  کا  کام کیا ہے۔
بہار اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی کارکردگی پر بات کرتے ہوئے انور نے کہا کہ ہم جائزہ لیں گے کہ ہماری کمزوری کہاں ہے اور ہماری کوشش ہوگی کہ  زمینی سطح پر کانگریس کو مضبوط کیا جائے۔
ہندوستھان سماچار


 
Top