राष्ट्रीय

Blog single photo

اروند کیجریوال حکومت کی پالیسیوں سے متاثر ہوکر ایس پی کے سابق وزیر مملکت سندیپ شکلا عام آدمی پارٹی میں شامل

30/11/2020

نئی دہلی، 30 نومبر( ہ س)۔
 سماج وادی پارٹی کے سابق وزیر مملکت اور ریاستی تعمیرات کارپوریشن کے سابق نائب چیئرمین، مسٹر سندیپ شکلا نے عام آدمی پارٹی کے صدر دفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران عام آدمی پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔ آپ کے راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے پارٹی کی ٹوپی اور پٹکا پہنا کر پارٹی میں شامل کی رکنیت دلا کر سندیپ شکلا کو مبارکباد دی. سنجے سنگھ نے صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس سے قبل بھی، مختلف سیاسی جماعتوں اور سماجی اداروں سے وابستہ افراد نے اروند کیجریوال کی حکومت کی طرف سے بجلی ، پانی ، تعلیم ،طب کے میدان میں حیرت انگیز کام کیے تھے۔ ان تبدیلیوں سے متاثر ہوکر عام آدمی پارٹی پارٹی میں شامل ہوگئے۔ آج کی اس کڑی میں، اترپردیش کی سیاست سے وابستہ ایک اہم رہنما ، جو اتر پردیش میں سماج وادی پارٹی کی حکومت کے دوران وزیر مملکت کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دے چکے ہیں، آج عام آدمی پارٹی میں شامل ہو گئے ہیں۔ میں دل کی گہرائیوں سے دل سے ان کا خیرمقدم کرتا ہوں۔ سندیپ شکلا نے صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ معزز اروند کیجریوال کی پالیسیوں سے متاثر ہوکر میں نے عام آدمی پارٹی میں شمولیت کا فیصلہ کیا ہے۔ جس طرح آج غریب ، دلت ، کسان ، ہر پسماندہ طبقے کا استحصال کیا جارہا ہے، اسی طرح حکومت کی آمرانہ پالیسیاں عوام پر زبردستی مسلط کی جارہی ہیں ، ملک کے ہر فرد کی نظریں بی جے پی کے متبادل کی تلاش میں ہیں۔مجھے لگتا ہے کہ اگر آج لگتا ہے کہ ملک میں بی جے پی کے لئے کوئی متبادل نظر آتا ہے تو وہ صرف اور صرف عام آدمی پارٹی ہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں اتر پردیش سے آیا ہوں۔ ہم نے اتر پردیش کی سیاست کو بہت قریب سے دیکھا ہے۔ آج اترپردیش میں بی جے پی کی حکومت ہے اور جس طرح بی جے پی نے اتر پردیش میں فرقہ واریت کا ماحول پیدا کیا ہے ، اس طرح مندر -مسجد کے نام پر لوگوں کو آپس میں لڑانا بہت پریشان کن ہے۔ پچھلے ایک سال میں ، جس طرح سے عام آدمی پارٹی اترپردیش میں عام آدمی پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ سنجے سنگھ کی قیادت میں جدوجہد کررہی ہے اور جس ماحول میں سنجے سنگھ نے ریاست میں تحریک پیدا کی ہے اس سے میں متاثر ہوں۔ اگر کوئی اترپردیش کے عوام کی ترقی کرسکتا ہے، تو وہ صرف اور صرف عام آدمی پارٹی ہے۔ اترپردیش کے عوام کو جس طرح سے تبدیلیوں کی ضرورت ہے جس طرح دہلی حکومت نے دہلی میں وزیر اعلی اروند کیجریوال کی سربراہی میں دہلی کے عوام کی ترقی میں کیا ہے۔ آج ، اتر پردیش کے عوام بھی ریاست میں عام آدمی پارٹی کی حکومت کے قیام کے منتظر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج جس طرح سے اترپردیش میں بی جے پی حکومت کی سرپرستی میں فرقہ واریت کو فروغ دیا جارہا ہے ، لوگوں کو مندر مسجد کے نام پر لڑایا جارہا ہے ، سیکولرازم کے خاتمے کی سازش کررہی ہے ، اسے روکنے کے لئے۔ اترپردیش سے بھارتیہ جنتا پارٹی کی طاقت کو اکھاڑنا انتہائی ضروری ہے۔ یہ کام صرف اور صرف محنت اور جدوجہد کے ذریعے ہی ہوسکتا ہے اور آج ملک میں جدوجہد صرف عام آدمی پارٹی ہی کر رہی ہے۔ نہ ہی بہوجن سماج پارٹی اور نہ ہی سماج وادی پارٹی اترپردیش میں بی جے پی کا متبادل بن گئی ہے۔صرف عام آدمی پارٹی سے ہی امید یں کرتے ہیں۔ میں سنجے سنگھ جی اور پوری عام آدمی پارٹی کو یقین دلاتا ہوں کہ میں عام آدمی پارٹی کے اصولوں کو پورے دل و جان سے عوام تک عام آدمی پارٹی کی پالیسیوں کو پھیلانے کے لئے کام کروں گا۔
ہندوستھان سماچار اویس


 
Top