राष्ट्रीय

Blog single photo

ہندستانی ادب کی 10 اہم تصانیف کے چینی اور روسی زبانوں میں تراجم مکمل ہونے کا اعلان

30/11/2020

نئی دہلی، 30 نومبر (ہ س)۔
 شنگھائی کوآپریشن آرگنائزیشن (ایس سی او) کی آن لائن نشست کے دوران آج ہندوستان کے عزت مآب نائب صدر جمہورےہ¿ ہند شری وینکیا نائیڈو نے جدید ہندستانی ادب کی 10 اہم تصانیف کے چینی اور روسی تراجم کے مکمل ہونے کا اعلان کیا۔ ےہ اعلان کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ہندوستانی علاقائی ادب کی ان نایاب تصانیف کے چینی اور روسی زبانوں میں تراجم سے ہندوستان کی قدیم ثقافتی وراثت میں دیگر ممالک کے لوگوں کی دلچسپی پیدا ہوگی۔معلوم ہو کہ ہندوستان کے عزت مآب وزیراعظم شری نریندر مودی نے جون 2019 میں قازقستان کی راجدھانی بشکیک میں ہوئے ایس سی او سمٹ میں اعلان کیا تھا کہ ہندوستانی زبانوں کی 10 اہم تصانیف کا چینی اور روسی زبانوں میں تراجم کیا جائے گا۔ اسی سلسلے میں ساہتےہ اکادمی نے جدید ہندستانی ادب کی 10 مختلف زبانوں کی اہم تصانیف کا انتخاب کیا اور ان کا چینی اور روسی زبانوں میں تراجم شائع کیا۔
 وزیراعظم نریندر مودی نے 10 نومبر 2020 کو ایس سی او نمائندوں کی بیٹھک میں ساہتےہ اکادمی کے ذریعہ ان تراجم کو مکمل کےے جانے کا اعلان کیا تھا۔ساہتےہ اکادمی نے اس موقع پر ان تصانیف کی انگریزی ایڈیشن کا بھی اشاعتِ نو کیا ہے۔
ذیل کی ہندستانی زبانوں کی تصانیف کا چینی اور روسی زبانوں میں تراجم شائع کیا گیا ہے : ’سورج مکھی سوپر‘ (مصنف : سید عبدالمالک، آسامی)؛ ’آروگیہ نیکیتن‘ (مصنف : تاراشنکر بندوپادھیائے، بنگالی)؛ ’ویویشال‘ (مصنف : جھویرچند میگھانی، گجراتی)؛ ’کوے اور کالا پانی‘ (مصنف : نرمل ورما، ہندی)؛ ’پرو‘ (مصنف : ایس ایل بھیرپا، کنڑ)؛ ’منوج داسنک کتھا و کہانی‘ (مصنف : منوج داس، اڑےہ)؛ ’مڑھی دا دیوا‘ (مصنف : گردیال سنگھ، پنجابی)؛ ’شِل نیرنگلل شِل منی ترکل‘ (مصنف : جے کانتن، تمل)؛ ’اِلّو‘ (مصنف : راچاکونڈا وشواناتھ شاستری، تیلگو) اور ’ایک چادر میلی سی‘ (مصنف : راجندر سنگھ بیدی، اردو)
ہندوستھان سماچاراویس




 
Top